حکمرانوں کی فروغ تعلیم میں عدم دلچپسی سے تعلیمی شعبہ زبوں حالی کا شکار ہے ، سردارحسین بابک

حکمرانوں کی فروغ تعلیم میں عدم دلچپسی سے تعلیمی شعبہ زبوں حالی کا شکار ہے ، ...

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہاہے کہ صوبے کے طلباءو طالبات کو داخلوں میں درپیش مسائل و مشکلات کو فوری طور پر حل کرنے کی ضرورت ہے لیکن بدقسمتی سے صوبائی حکومت تعلیمی شعبہ کو پس پشت ڈالا اور تعلیمی ایمرجنسی کے اعلان کے باوجود ہر سال تعلیمی بجٹ میں کمی کر کے مسائل میں اضافہ کیا، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ صوبے کے طول و غرض میں طلباءو طالبات کو داخلے نہیں مل رہے اور وہ در بدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہیں، انہوں نے اس حوالے سے حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ حکمرانوں کی تعلیم کے فروغ میں عدم دلچسپی کی وجہ تعلیمی شعبہ زبوں حالی کا شکار ہے اوراسی وجہ سے مسائل میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے ، انہوں نے کہا کہ صوبے میں کالجوں کی تعداد اور اکثر کالجوں میں سٹاف کی کمی نے طلباءو طالبات کی مشکلات میں اضافہ کیا ہے جبکہ حکومت کی طرف سے تعلیمی اداروں کی تعمیر کے رواں منصوبوں کے خاتمے، نئے کالجز کے نہ بنانے کے ساتھ سٹاف کی کمی پورا نہ کرنے کی وجہ سے ڈراپ آوٹ میں اضافہ ہوگا جو کہ انتہائی افسوسناک اور تکلیف دہ ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو صوبے کے تمام کالجز میں سیکنڈ شفٹ کا فوری اجرا¾ کرنا چاہیے اور کالج فنڈز میں اضافہ کرنا چاہیئے تاکہ کالجز میں سٹاف کی کمی کو ایمرجنسی بنیادوں پر پورا کیا جائے ،سردار بابک نے کہا کہ حکومت کو صوبے میں زیرتعمیر تعلیمی اداروں کو جلد از جلد مکمل کرنے کے لئے جنگی اور ہنگامی بنیادوں پر فنڈز جاری کرنے چاہئیں اور صوبے میں ہائر سیکنڈری سکولز کی تعمیر کیلئے سکیم کا اجراءکرنا چاہئے ، انہوں نے کہا کہ حکومت کوکالجز میں ہاسٹلزکے قیام اور تمام بنیادی سہولیات کی فراہمی ترجیحی بنیادوں پر کام شروع کرنا چاہئے ، سردار حسین بابک نے کہاکہ کالجز میں سٹاف کی کمی پوری کرنے کے لئے پبلک سروس کمیشن اور محکمانہ پروموشن کے ذریعے تعیناتی کو یقینی بنایا جائے، انھوں نے کہا کہ داخلہ مہم شروع ہے لیکن حکومت کی عدم دلچسپی نے طلباءو طالبات کی پریشانی میں اضافہ کیا ہے حکومت سنجیدگی کا مظاہرہ کرے اور وطن کے مستقبل سے نہ کھیلے کیونکہ یہی نوجوان کل اس ملک کی قیادت کریں گے۔ سردار بابک نے کہا کہ صوبہ میں تعمیر شدہ کالجزکیلئے جلد از جلد محکمہ خزانہ پوسٹوں کی منظوری دے تاکہ ہائیر ایجوکیشن کے داخلہ میں اضافہ اور ڈراپ آوٹ میں کمی آ سکے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...