پی سی بی نے ورلڈکپ کے ”سرپرائز پیکیج“ کو بھی سینٹرل کنٹریکٹ سے محروم کر دیا

پی سی بی نے ورلڈکپ کے ”سرپرائز پیکیج“ کو بھی سینٹرل کنٹریکٹ سے محروم کر دیا
پی سی بی نے ورلڈکپ کے ”سرپرائز پیکیج“ کو بھی سینٹرل کنٹریکٹ سے محروم کر دیا

  


لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) آئی سی سی کرکٹ ورلڈکپ 2019ءکا تاج انگلینڈ کے سر سج چکا ہے اور قومی ٹیم سیمی فائنل میں پہنچے بغیر ہی ٹورنامنٹ سے آﺅٹ ہو گئی جس کے بعد ٹیم اور انتظامیہ میں بھی ’تبدیلی‘ کا بھونچال آنے کو ہے۔

پی سی بی سلیکشن کمیٹی نے قومی سکواڈ کا اعلان کیا تو ابتدائی طور پر اس میں محمد عامر اور وہاب ریاض شامل نہیں تھے اور پھر بعد ازاں باﺅلرز کی کارکردگی دیکھتے ہوئے محمد عامر اور وہاب ریاض کو ورلڈکپ سکواڈ میں شامل کر لیا گیا اور دونوں نے ہی توقعات کے مطابق اچھی کارکردگی بھی دکھائی۔

پاکستان کے ورلڈکپ سکواڈ میں ایک نام ایسا بھی تھا جس پر سب حیران تھے مگر چیف سلیکٹر نے اس کھلاڑی کو ”سرپرائز پیکیج“ قرار دیا مگر ورلڈکپ کا ایک میچ بھی نہیں کھیل سکا۔ جی ہاں! بات ہو رہی ہے نوجوان فاسٹ باﺅلر محمد حسنین کی، جنہوں نے پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) عمدہ کارکردگی اور اپنی رفتار کی بدولت ورلڈکپ سکواڈ میں جگہ پائی مگر ایک بھی میچ نہیں کھیل سکے اوراب انہیں سینٹرل کنٹریکٹ سے بھی محروم کر دیا گیا ہے۔

ماہرین کرکٹ نے اس امر پر حیرت کا اظہار کیا ہے کہ محمد حسنین کو سینٹرل کنٹریکٹ نہ دینا کیا اس بات کی جانب اشارہ ہے کہ وہ اب پی سی بی کے فیوچر پروگرام میں بھی شامل نہیں ہیں کیونکہ مستقبل کیلئے انہیں تیار کرنا اگر پی سی بی کے منصوبے میں شامل ہوتا تو سینٹرل کنٹریکٹ میں بھی انہیں جگہ ضرور ملتی۔

مزید : کھیل


loading...