کشمیر ریلی پر حملہ پاکستان اور اسلام دشمنوں کی کارروائی ہے: سراج الحق 

        کشمیر ریلی پر حملہ پاکستان اور اسلام دشمنوں کی کارروائی ہے: سراج الحق 

  

  کراچی (اسٹاف رپورٹر)امیرجماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ وفاقی وصوبائی حکومتیں اور قانون نافذ کرنے والے ادارے بتائیں کہ دودن گزرنے کے باوجود اب تک جماعت اسلامی کی بھارت کے خلاف کشمیر ریلی پر بم حملے کے مجرموں کو گرفتار کیوں نہیں کیا گیا،کشمیر ریلی پر حملہ پاکستان اوراسلام دشمنوں کی کارروائی ہے جس میں کوئی شک نہیں ہے کہ انڈیا لابی ملوث ہے،یہ حملہ کسی فرد واحد نے نہیں کیا بلکہ اس کے پیچھے پوری ایک سازش ہے جس کافائدہ بھارت کو ہوااور نقصان پاکستان کو ہوا،حملے میں 37کارکنان زخمی اور 1کارکن  شہید ہوا،کراچی کے نوجوانوں نے آزادیء کشمیر کی جدوجہد میں بڑی قربانیاں اور خون دیا ہے،یہ معصوم اور پاک خون کشمیر کی آزادی کا ذریعہ بنے گا،کشمیر ہماری زندگی وموت اور ملک کی بقا سلامتی کا مسئلہ ہے، حکمرانوں نے کشمیر سے دست بردار ہونے کی کوشش کی تو یہ نظریاتی اور جغرافیائی طور پر موت ثابت ہوگی،مسئلہ کشمیر سے غداری کرنے والوں کو قوم کبھی معاف نہیں کرے گی،مسئلہ کشمیر پر وفاقی حکومت کی کارکردگی انتہائی مایوس کن رہی ہے جس پر پوری قوم اور کشمیری بھی ناخوش ہیں،حکمرانوں نے تقریروں کے علاوہ کوئی ایکشن نہیں لیا اورمودی کو کوئی چیلنج نہیں دیا،جدوجہد آزادی کشمیر کی حمایت اور پشتیبانی جاری رکھیں گے۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے ادارہ نورحق میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پرنائب امیر جماعت اسلامی میاں اسلم،امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن، نائب امرا کراچی ڈاکٹر اسامہ رضی، مسلم پرویز، راجا عارف سلطان، سکریٹری کراچی عبد الوہاب، سکریٹری اطلاعات زاہد عسکری ودیگر بھی موجود تھے۔حافظ نعیم الرحمن نے بتایا کہ سینیٹر سراج الحق کراچی میں ریلی پر حملہ کے بعد پیدا ہونے والی صورتحال کے بعدفوری طور پر گزشتہ رات کراچی پہنچنا چاہتے تھے لیکن فلائٹ ملتوی ہونے کی وجہ سے وہ روانہ نہ ہوسکے بعد ازاں بذریعہ سڑک وہ آج کراچی پہنچے ہیں،سینیٹر سراج الحق نے مزید کہاکہ کراچی کی موجودہ صورتحال دیکھ کر ایسا محسوس ہوتا ہے کہ اس شہر کا کوئی والی وارث نہیں، ہر حکومت کراچی سے سمیٹنے کی کوشش تو کرتی ہے لیکن شہر کو کچھ دیتی نہیں ہے،وفاقی وصوبائی حکومتیں اور بلدیاتی حکومت نعرے اور دعوے تو بہت کرتی ہیں لیکن عملا حال یہ ہے کہ بار ش ہوتے ہی شہر کی سڑکیں پانی سے بھر جاتی ہیں،انسان چاند پر قدم رکھ چکا اور اب مریخ کی طرف جارہا ہے لیکن کراچی میں حکمرانوں نے ابھی تک نکاسی آب کا انتظام بہتر طریقے سے نہیں کیا۔وفاقی وصوبائی اور شہری حکومتیں ایک دوسرے پر الزامات تو لگاتی ہیں لیکن مسائل حل نہیں کرتیں،صوبائی حکومت اور میئر کراچی کہتے ہیں کہ کچرا اٹھانا ان کا کام نہیں، وہ بتائیں کہ ان کاآخر کام کیا ہے؟،سخت گرمی اور شدید حبس کے موسم میں بھی عوام بجلی سے محروم ہیں،تھوڑی سی بارش کے بعد شہر بھر میں بجلی کا پورا نظام درہم برہم ہوجاتا ہے۔ سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ حکومت مسئلہ کشمیر کے حوالے سے سنجیدہ نہیں،پارلیمنٹ میں ہمیشہ ایک ہی قرارداد تاریخ بدل کر پیش کردی جاتی ہے، کشمیری عوام مائیں، بہنیں، بچے اور بزرگ انتظار کررہے ہیں کہ کب پاکستانی حکمران کشمیر کے حوالے سے راست قدام کریں گے۔

مزید :

صفحہ اول -