ملی مجلس شرعی کے اجلاس میں تحفظ اسلام بل کومسترد کرنے کوئی فیصلہ نہیں ہوا،مولانا عبدالرؤف فاروقی 

         ملی مجلس شرعی کے اجلاس میں تحفظ اسلام بل کومسترد کرنے کوئی فیصلہ نہیں ...

  

لاہور ( پ ر) جمعیت علماء  اسلام پاکستان (س) کے مرکزی سیکرٹری جنرل مولانا عبدالرؤف فاروقی نے اپنے ایک وضاحتی بیان میں کہا ہے کہ 6 اگست کو لاہور میں منعقد ہونے والے ملی مجلس شرعی کے اجلاس میں. پنجاب اسمبلی کے تحفظ اسلام بل کومشکوک قراردینے اورمستردکرنیکاکوئی فیصلہ ہوا اورنہ ہی اسکی کوئی پریس ریلیزجاری کرنیکافیصلہ ہواتھا. اجلاس میں ایک کمیٹی بنائی گئی تھی جو اس بل کاجائزہ لیکرتجزیاتی رپورٹ ملی مجلس  شرعی کو پیش کریگی. میں بھی اس کمیٹی کاممبربنایاگیاتھا اب تک  اس کمیٹی کاکوئی اجلاس نہیں ہوا اوریہ بھی تجویزتھی کہ ملی مجلس شرعی 9اگست کو لاہور میں جمیعت علماء اسلام پاکستان (س) کے زیراہتمام اہلسنت کی تمام جماعتوں کے آل پارٹیز اجلاس میں اپنی رائے پیش کرے تاکہ اہلسنت کامتفقہ مؤقف طے کرنے میں آسانی ہو  اب سناہے کہ کوئی پریس ریلیزجاری ہوئی جس میں اس بل کوفتنوں کواجاگرکرنیکاذریعہ قراردیکرمستردکیاگیاہے، ملی مجلس شرعی کے6اگست کو منعقدہ اجلاس میں نہ توایساواضح مؤقف طے کیاگیااورنہ ایساکوئی فیصلہ کیاگیاہے۔  یہ وضاحت ضروری ہے.اہل سنت کاموقف متفقہ طورپربہرحال 9 اگست کو لاہور میں منعقد ہونے والے اہلسنت کی تمام جماعتوں کے آل پارٹیز اجلاس میں طے کیاجائیگا اور اس بل کے تمام مندرجات اور پہلووں پرغورہوگا۔

مولانا عبدالرؤف فاروقی 

مزید :

صفحہ آخر -