چین کا امریکہ سے تائیوان کو اسلحے کی فروخت روکنے کا مطالبہ

چین کا امریکہ سے تائیوان کو اسلحے کی فروخت روکنے کا مطالبہ
چین کا امریکہ سے تائیوان کو اسلحے کی فروخت روکنے کا مطالبہ

  

بیجنگ(ڈیلی پاکستان آن لائن)چین نے امریکہ سے تائیوان کو اسلحے  کی فروخت روکنے اور فوجی تعلقات ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ چین امریکہ  تعلقات اور آبنائے پار امن واستحکام کو مزید نقصان پہنچانے سے بچا جاسکے۔

چینی وزارت خارجہ کے ترجمان  وانگ وین بن نے پریس بریفنگ میں امریکہ کی جانب سے ایک بار پھر تائیوان کو اسلحے  بیچنے کے ارادے کے حوالے سے رپورٹس پر پوچھے گئے سوال کے جواب میں  کہا  کہ تائیوان کو امریکی ہتھیاروں کی فروخت چین امریکہ تین مشترکہ اعلامیوں خصوصا 17اگست کے اعلامیے کی سنگین خلاف ورزی ہے جس سے چین کی خودمختاری اور سلامتی کے مفادات کو شدید نقصان پہنچا اور بین الاقوامی تعلقات کے بنیادی اصولوں کی سنگین خلاف ورزی ہے،چین اس کی بھرپور مخالفت کرتا ہے۔وانگ نے کہا کہ تائیوان کا معاملہ چین کی خودمختاری، علاقائی سالمیت اور بنیادی مفادات سے متعلق ہے،چین اپنی خودمختاری اور سلامتی کو برقرار رکھنے کا پختہ عزم رکھتا ہے۔چینی ترجمان نے کہا کہ ہم امریکہ سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ایک چین اصول اور چین   امریکہ  تین  مشترکہ اعلامیوں پر دیانت داری سے عمل کرے اور تائیوان کے ساتھ اسلحے کی فروخت اور فوجی تعلقات کو روک دے  ایسا نہ ہو کہ اس سے چین اور امریکہ کے تعلقات اور  آبنائے پار  امن اور استحکام کو مزید نقصان پہنچے۔

مزید :

بین الاقوامی -