برصغیر میں 05 اگست 2019کا دن بڑے کرب اور تکلیف سے یاد رکھا جائے گا :او آئی سی میں پاکستان کے مستقل مندوب

 برصغیر میں 05 اگست 2019کا دن بڑے کرب اور تکلیف سے یاد رکھا جائے گا :او آئی سی میں ...
 برصغیر میں 05 اگست 2019کا دن بڑے کرب اور تکلیف سے یاد رکھا جائے گا :او آئی سی میں پاکستان کے مستقل مندوب

  

جدہ (محمد عامل عثمانی  )یوم استحصال کشمیر کے موقع پر OIC میں پاکستان کے مستقل مندوب، عزت مآب رضوان سعید شیخ نے قونصل خانہ پاکستان، جدہ کے زیر اہتمام منعقد کردہ تقریب کے دوران خطاب کرتے ہوے کہا کہ برصغیر میں 05 اگست 2019کا دن بڑے کرب اور تکلیف سے یاد رکھا جائے گا کیونکہ اس دن ہندوستان نے انسانی حقوق، اپنے وعدوں اور بین الاقوامی قانون کی دھجیاں اڑاِتے ہوئے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کر دیا۔ انہوں نے کہا کہ بھارت نے اس اقدام کے ذریعے اقوام متحدہ کی قرار دادوں اور کشمیریوں کی شناخت کا مذاق اڑایا ہے - درحقیقت ، بھارتنے یہ اقدام مقبوضہ کشمیر میں آبادی کے تناسب کو تبدیل کرنے لیے کیا تاکہ کشمیریوں کو اپنی ہی سر زمین پر اقلیت میں تبدیل کر دیا جائے اور ان کی ثقافتی شناخت کو ختم کر دیا جائے۔

رضوان شیخ نے کہا کہ کشمیریوں کا سارا مقدمہ ان کے حق خودارادیت میں پنہاں ہے۔ تاہم بھارتی حکومت کی یہ کوشش ہےکہ آبادی کے تناسب میں ردوبدل کے ذریعے کشمیریوں کے حق خودارادیت پر ضرب لگائی جائے۔ہندوستان کے پہلے وزیراعظم ، جواہر لال نہرو ، نے کھلے عام یہ وعدہ کیا تھا کہ کہ کشمیریوں کی شناخت پر آنچ نہیں آئے گی تاہم موجودہ بھارتی حکومت اس جداگانہ شناخت کو ختم کرنے کے درپے ہے۔اس بھارتی دعوے کے تناظر میں کہ حالیہ اقدامات کشمیر کی معیشت کی بہتری اور ترقی کے لیے اٹھائے گئے ہیں سفیر پاکستان نے سوال اٹھایا کہ ایک سال سے مکمل لاک ڈاو¿ن اور کرفیو سے کونسی ترقی اور کس قسم کا فلاحی کام سرانجام دیا گیا یے ؟ انہوں نے کہا کہ ایک اندازےکے مطابق مقبوضہ کشمیر میں ابھی تک چار ارب ڈالرز کا معاشی نقصان ہوچکا ہے۔ یہ نقصان ہندوستان کا نہیں صرف کشمیریوں ہی کا ہواہے۔

 رضوان شیخ نے مزید اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ ایک سال میں تقریبا 13 ہزارکشمیریوں کو گرفتار کیا گیا ہے اور کشمیریوں کی آزادی کی جدوجہد میں اب تک تقریبا ایک لاکھ سے زیادہ افراد شہید ہوچکے ہیں تاہم اس قدر تشدد کے باوجود کشمیری اپنے جمھوری اور انسانی حق کے حصول کےلئے کوشاں نظر آتے ہیں -سفیر پاکستان نے واشگاف لفظوں میں کہا کہ پاکستان کشمیریوں کی اخلاقی ، سیاسی اور سفارتی مدد سے کبھی دستبردار نہیں ہوگا ۔رضوان شیخ نے حال ہی میں جاری کردہ ،پاکستان کے نئے سیاسی نقشہ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان نے دنیا کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کی ناکام کوشش کی ہےکہ کشمیر ایک تصفیہ شدہ مسئلہ ہے لیکن پاکستان نے ساری دنیا کے سامنےاس نقشہ کے ذریعے ثابت کیا ہے کہ یہ علاقہ تصفیہ طلب ہے اور پاکستان اس سے کبھی بھی دستبردار نہیں ہوگا۔ یوم استحصال سے دیگر خطاب کرنے والوں میں قونصل خالد مجید ، کشمیر کمیٹی کے صدر مسعود احمد پوری، پرویزیوسف مسیح ، چودھری معروف اور دیگر شامل ہیں ۔

مزید :

عرب دنیا -