500ا رب روپے کے زرعی قرضوں کے نام پر صنعت کاروں کو نوازاگیا

500ا رب روپے کے زرعی قرضوں کے نام پر صنعت کاروں کو نوازاگیا

  

لاہور(آن لائن) مرکزی صدر کسان بورڈ پاکستان صادق خان خاکوانی نے قومی اسمبلی کی ذیلی کمیٹی برائے خزانہ کے اجلاس میں 500ارب روپے کے سستے زرعی قرضے کسانوں کی بجائے صنعت کاروں کو دئیے جانے کے انکشاف پر اپنے تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ ان 500ارب روپے کے قرضوں کا فوری آڈٹ کروائے۔ انھوں نے کہا کہ زراعت کے لیے مختص رقم جس پر صرف اور صرف کاشتکاروں کا حق تھا کس طرح صنعتی شعبہ کو ٹرانسفر ہوئی اور مطالبہ کیا کہ اس گھناؤنے کاروبار میں ملوث افراد کو فوری طور پر کٹہرے میں لایا جائے۔ مزید برآں کاشتکاروں کو زرعی قرضوں کے حصول کے لیے زرعی ترقیاتی بنک سے بے انتہا شکایات ہیں، ڈپٹی گورنر سٹیٹ بنک پاکستان نے زرعی ترقیاتی بنک کی کارکردگی کے حوالے سے جو رپورٹ مذکورہ کمیٹی میں پیش کی ہے وہ حکمرانوں کے لیے بھی لمحہ فکریہ ہے۔ مرکزی صدر نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ کسان دوست پالیسیاں بنائے، زرعی قرضہ جات کے حصول کے لیے کاشکاروں سے کی جانے والی زیادتیوں کا سدباب کیا جائے، زرعی ترقیاتی بنک کی کارکردگی کو مسلسل مانیٹر کیا جائے اور کاشتکاروں کو بلاسود قرضے دئیے جانے کی پالیسی بنائی جائے۔

انھوں نے کہا کہ کسان خوشحال ہو گا تو ملک بھی ترقی کرے گا۔

مزید :

کامرس -