جدہ:غیرملکی کارکنوں کی میڈیکل انشورنس کروانے کی ذمہ داری کفیل کی ہے

جدہ:غیرملکی کارکنوں کی میڈیکل انشورنس کروانے کی ذمہ داری کفیل کی ہے

جدہ (محمد اکرم اسد/بیوروچیف)انشورنس امورکے ماہر ڈاکٹرفہدالغزی نے خبردارکیاہے کہ غیرملکی کارکن اپنی ملازمت بچانے کیلئے فیملی میڈیکل انشورنس خود کروارہے ہیںحالانکہ اس کی ذمہ داری کفیل پر عائد کی گئی ہے۔ وہ ہیلتھ انشورنس کونسل کی اس پابندی کے منفی اثرات پر اظہارخیال کررہے تھے جس کے تحت نجی اداروں و کمپنیوں اور افراد کو اس امرکاپابندبنایاگیاہے کہ وہ اپنے غیرملکی ملازمین اور ان کے اہل خانہ کا میڈیکل انشورنس کروائیں۔ یہ انتباہ بھی کیاگیاہے کہ کسی غیرملکی یااس کے اہل خانہ میں سے کسی فردکامیڈیکل انشورنش نہ ہوتو ایسی صورت میں نہ تواقامہ بنایاجائیگا اور نہ اقامے میں توسیع ہوگی۔اقامہ کے اجراءاور توسیع کو غیرملکی ملازم اور اس کے اہل خانہ کی میڈیکل انشورنس سے مربوط کردیاگیاہے۔ الغزی نے کہا کہ کئی کفیل اس پابندی کا ناجائز فائدہ اٹھاسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بعض کفیل اپنے مکفول پرپابندی عائد کردیتے ہیں کہ وہ فیملی میڈیکل انشورنس کے اخراجات خود ہی برداشت کریں۔ اس طرح کارکن اپنے خرچ پر انشورنس کروالیتاہے۔

مزید : عالمی منظر


loading...