بابری مسجد کی شہادت اور بھارتی حکومت کیخلاف اسلامی جمعیت طلبہ پی یو کا احتجاجی مظاہرہ

بابری مسجد کی شہادت اور بھارتی حکومت کیخلاف اسلامی جمعیت طلبہ پی یو کا ...

  

لاہور ( خبرنگار) تاریخی بابری مسجد کی شہادت کے سانحہ کو 22برس گزرنے اور بھارتی حکومت کے بے حس رویہ کیخلاف اسلامی جمعیت طلبہ پنجاب یونیورسٹی کی جانب سے لاہور پریس کلب کے باہر احتجاج کیا گیا مظاہرہ کی قیادت سیکرٹری جنرل اسلامی جمعیت طلبہ پنجاب یونیورسٹی بہرام سعید نے کی مظاہرین میں پنجاب یونیورسٹی کے طلبہ نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ ان سے خطاب کرتے ہوئے بہرام سعید نے کہا کہ ایودھیا میں واقع مسلمانوں کی تاریخی اور عظیم الشان بابری مسجد کو 6 دسمبر 1992کو انتہا پسند ہنددﺅں نے ایل کے ایڈوانی کی زیرِقیادت شہید کر دیا۔اس وقت کی بھارتی حکومت بظاہر اس اقدام کی مخالفت کرتی رہی مگر جب مسجد کو شہید کیا گیا تو خاموش تماشائی کا کردار ادا کیا اس سانحے کو 22برس گزر چکے ہیں مگر اس کے ذمہ داران کیخلاف کبھی کوئی کارروائی نہیں کی گئی بھارتی سپریم کورٹ کے واضح احکامات کو بھی ہوا میں اڑا دیا گیا موجودہ بھارتی حکومت بھی اسی تسلسل کا شکار ہے اور اس کے سربراہ نریندر مودی مسلمانوں کیخلاف دہشت گردی اور قتل و غارت میں واضح طور پر شریک رہے ہیں آج بھی ہندوستان میںاور کشمیر میں مسلمانوں پر ظلم و تشدد اور پاکستان کی سرحدوں پر دہشت گردی جاری ہے بہرام سعید نے اپنے خطاب میں مزید کہا کہ ہم پاکستانی حکمرانوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ بھارتی حکومت سے بابری مسجد کی شہادت کے ذِمہ داران کیخلاف سخت کاروائی کا مطالبہ کرے۔

 اور بارڈر اور کشمیر کی صورتحال کا سنجیدگی سے جائزہ لیتے ہوئے اس کے لیے جلد سے جلد مثبت اقدامات کرے۔نیز عالمی اسلامی حکمرانوں کی توجہ بھی کشمیرکے مسلئہ کی جانب مبذول کروائی جائے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -