لین دین کے تنازع پر9 بچوں کے باپ کا قتل۔پولیس رویے کیخلاف ورثاء کا احتجاج

لین دین کے تنازع پر9 بچوں کے باپ کا قتل۔پولیس رویے کیخلاف ورثاء کا احتجاج

 لاہور(بلال چودھری) نشتر کالونی کے علاقہ میں لین دین کے تنازع پرقتل ہونے والے 9بچوں کے باپ کی نعش انویسٹی گیشن پولیس نے پوسٹ مارٹم کے بعد ورثا کے حوالے کر دی جسے بعد ازاں سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں سپرد خاک کر دیا گیا۔مقتول کے ورثا کاپو پولیس کے خلاف احتجاج، پولیس گرفتار ملزم کو پروٹوکول دے رہی ہے اور ہر کام میں لیت و لعل سے کام لے رہی ہے ،مظاہرین کا الزام ۔تفصیلات کے مطابق تھانہ نشتر کالونی کے علاقہ چونگی امر سدھو اتحاد پارک ڈی بلاک گلی نمبر 3کے رہائشی 40سالہ محمد رشید نے قاسم نامی شخص سے 4لاکھ روپے لینے تھے جس نے 6دسمبر کی رات کو اسے پیسے دینے کے بہانے گھر بلا کرساتھیوں سے مل کرفائرنگ کرکے قتل کردیا ،ملزمان موقع سے فرار ہو گئے تھے بعد ازاں لواحقین کی نشاندہی پر پولیس نے ملزم قاسم کو چھاپہ مار کر حراست میں لے لیا ۔گزشتہ روز پوسٹ مارٹم کے بعد مقتول کی نعش کو ورثا کے حوالے کر دیا گیا۔جسے بعد ازاں سینکڑوں سوگواروں کی موجودگی میں سپرد خاک کر دیا گیا ۔اس موقعہ پر کئی رقت آمیز مناظر دیکھنے میں آئے۔مقتول کے ورثا اور اہل علاقہ نے پولیس کے خلاف اتحاد ٹاؤن میں احتجاج کیا ۔مظاہرین کا کہنا تھا کہ پولیس نے اس مقدمہ میں نہایت سست روی کا مظاہرہ کیا ہے ، ہماری نشاندہی پر ملزم قاسم کو تو گرفتار کر لیا گیا ہے لیکن اس کو تھانہ میں پروٹوکول دیا جا رہا ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ پولیس کی جانب سے واقعہ کا مقدمہ بھی 16گھنٹے کے بعد درج کیا گیا جس کیلئے ہمیں کئی دفعہ تھانہ کے چکر لگانے پڑے جبکہ پولیس اہلکار وں کے لیت و لعل کی وجہ سے پوسٹ مارٹم میں بھی تاخیر کا سامنا کرنا پڑا اور کیس کے باقی ملزمان کو فرار ہو کر روپوش ہونے میں بھی مدد ملی ہے ۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ پولیس حکام معاملے کی انکوائری کریں اور متعلقہ پولیس اہلکاروں کے خلاف کارروائی کر کے انصاف کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔

مزید : علاقائی


loading...