رشید پورہ‘ کوٹلی پیر عبدالرحمٰن کے مکین گیس لوڈشیڈنگ کیخلاف سراپا احتجاج

رشید پورہ‘ کوٹلی پیر عبدالرحمٰن کے مکین گیس لوڈشیڈنگ کیخلاف سراپا احتجاج

 لاہور( خبرنگار) شہر کے دیگر علاقوں کی طرح رشید پورہ اور کوٹلی پیر عبدالرحمن کے مکین بھی گیس کی شدید لوڈشیڈنگ کے خلاف سراپا احتجاج بن کر رہ گئے ہیں۔ مکینوں نے حکمرانوں اور گیس حکام کو گیس کی شدید قلت کو دور کرنے کا مطالبہ کر دیا۔ ’’پاکستان ‘‘ ٹیم کو رشید پورہ اور کوٹلی پیر عبدالرحمن کے مکینوں کی ایک بڑی تعداد نے بتایا کہ سردی کا موسم شروع ہونے سے قبل گیس کا پریشر کم تھا جبکہ سردی شروع ہوتے ہی گیس کا پریشر چار سے چھ گھنٹے ڈاؤن ہونا شروع ہوگیا ہے اور جوں جوں سردی کی شدت میں اضافہ ہو رہاہے اسی طرح گیس کی لوڈشیڈنگ بھی بڑھ رہی ہے جس میں گیس کی لوڈشیڈنگ چار سے چھ گھنٹے بڑھ کر 8 سے 10 گھنٹے تک پہنچ گئی ہے اور گیس نہ ملنے پر ایل پی جی کا استعمال کر رہے ہیں اور ایل پی جی نہ ملنے پر مجبوراً لکڑیوں کا استعمال کر رہے ہیں۔ اس کے ساتھ گیس کے بھاری بل بھی دے رہے ہیں۔ اس موقع پر ساجد علی، اسجد علی ، نواز طاہر، اکبر خان، اقرار اسلم، شہناز بی بی، الفت یعقوب اور زاہد حسین نے کہا کہ گیس کمپنی کے دفتر واقع ہربنس پورہ میں متعدد بار شکایات لے کر جا چکے ہیں اس کے باوجود کوئی شنوائی نہیں ہو رہی ہے ۔ گیس حکام نے نوٹس نہ لیا تو اگلے ماہ آنے والے گیس بلوں کو جمع نہیں کروائیں گے بلکہ شالیمار چوک بلاک کر کے گیس کے بلوں کو نذر آتش کیا جائے گا۔ اس موقع پر شیر محمد، محمد علی اور اکبر علی شاہ نے کہا کہ کوٹلی پیر عبدالرحمن اور رشید پورہ کی آبادیوں کا تعلق گنجان آبادیوں سے ہے اور ان آبادیوں میں بعض گلیاں تنگ ہیں جس میں صبح 7 بجے سے گیس کا پریشر ڈاؤن ہو جاتا ہے اور دن بھر گیس کا پریشر ڈاؤن رہتا ہے اور اگر گیس آئے بھی تو صرف چاہے کا کپ تیار ہو سکتا ہے اور کھانا تیار نہیں ہو سکتا۔ رات جب بچے سو جاتے ہیں تو گیس کا پریشر بحال ہوتا ہے۔ اس میں حکمرانوں اس حلقہ سے کامیاب ہونے والے ارکان اسمبلی کو چاہیے کہ وہ ہمارے علاقے میں گیس کی قلت کودور کرنے میں اپنا کردار ادا کریں تاکہ صارفین کو گیس کے حوالے سے درپیش دشواری سے چھٹکارہ مل سکے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...