احتجاج کی آڑ میں کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دینگے ،وزیر اعظم

احتجاج کی آڑ میں کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دینگے ،وزیر اعظم

  

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیر اعظم نوازشر یف نے کہا ہے کہ احتجاج کی آڑ میں کسی کو قانون ہاتھ میں لینے اور اپنی من مانی کر نے کی اجازت نہیں دی جاسکتی جو قانون ہاتھ میں میں لینے کی کوشش کر یں اسکے خلاف آئین وقانون کے مطابق کاروائی کی جائیگی ‘احتجاج اور مذاکرات ایک ساتھ نہیں چل سکتے ‘ تحر یک انصاف کو ملک میں جلاؤ گھیراؤ ‘ تشدداور مذاکرات میں سے کسی ایک راستے کا انتخاب کر نا ہو گا ‘حکو مت نے ہمیشہ مذاکرات کے ذریعے ہی مسائل حل کر نے کو تر جیح دی ہے ۔ وہ اتوار کے روز لاہور میں وزیر اعلی پنجاب میاں شہبا زشر یف سے ملاقات کے دوران گفتگو کر رہے تھے جبکہ وزیر اعلی شہبا زشر یف نے وزیر اعظم کو پنجاب کی امن وامان و تر قیاتی منصوبوں کی صورتحال سمیت دیگرامورکے حوالے سے بر یفنگ دی اور ملاقات کے دوران تحریک انصاف کی جانب سے پنجاب کے مختلف شہروں کو زبردستی بند کروانے کے اقداما ت سے نمٹنے کیلئے آئندہ کی حکمت عملی تیار کی گئی اوروزیر اعلی نے آج فیصل آبا دمیں تحر یک انصاف کے احتجاج سے نمٹنے کیلئے کیے جانیوالے اقدامات سے بھی آگا ہ کیا ہے جبکہ وزیر اعظم میاں نوازشر یف نے کہا کہ حکو مت ہر شعبے میں عوام کو ریلیف دینے کیلئے اقدامات کر رہی ہے اور ملک کی تر قی وخوشحالی حکو مت کی اولین تر جیح ہے جس پرکسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جا ئیگا ۔ انہوں نے کہا کہ کسی کو بھی احتجاج کی آڑ میں قانون ہاتھ میں لینے اور من مانی کر نے کی اجازت نہیں دی جا سکتی پولیس سمیت تمام ادارے امن وامان کی صورتحال کو یقینی بنانے کیلئے اقدامات کر یں اورجو کوئی قانون کو ہاتھ میں لیتا ہے اس کے خلاف آئین کے مطابق کاروائی کی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف ایک طر ف مذاکرات کی بات کرتی ہے تو دوسری طرف جلاء گھیراؤ اور امن تباہ کر نے کی بھی باتیں کی جا رہی ہیں جو ناقابل برداشت ہیں۔

مزید :

صفحہ اول -