’پہلے بنگلہ دیشی نے میرا ریپ کیا، پھر اُس نے پاکستانی دوست کو بلالیااورپھر۔۔۔‘ عرب ملک میں نوجوان بھارتی لڑکی کے ساتھ ایسا شرمناک واقعہ کہ سن کر ہی انسان توبہ پر مجبور ہوجائے

’پہلے بنگلہ دیشی نے میرا ریپ کیا، پھر اُس نے پاکستانی دوست کو ...
’پہلے بنگلہ دیشی نے میرا ریپ کیا، پھر اُس نے پاکستانی دوست کو بلالیااورپھر۔۔۔‘ عرب ملک میں نوجوان بھارتی لڑکی کے ساتھ ایسا شرمناک واقعہ کہ سن کر ہی انسان توبہ پر مجبور ہوجائے

  

دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ عرب امارات میں مقیم ایک بھارتی لڑکی کو بنگالی لڑکے نے محبت کا جھانسہ دے کر نہ صرف خود اس کی آبروریزی کی بلکہ مزید بے حیائی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنے پاکستانی دوست اور ایک امارتی شخص کو بھی اس کی عزت سے کھیلنے کا موقع فراہم کیا۔

گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق 17 سالہ لڑکی اور 24 سالہ بنگالی لڑکے کے درمیان کچھ عرصے سے تعلقات قائم تھے۔ لڑکی کا کہنا ہے کہ ایک روز بنگالی نوجوان نے اسے اپنے ساتھ سیر پر چلنے کی پیشکش کی جسے اس نے قبول کرلیا۔ طے شدہ وقت پر وہ آیا اور گاڑی میں بٹھا کر لڑکی کو اپنے ساتھ لے گیا۔ لڑکی کا کہنا ہے کہ بنگالی کے ساتھ دو مزید افراد بھی موجود تھے اور یہ تینوں اسے الموحیسنہ کے علاقے میں ایک ویران جگہ پر لے گئے، جہاں اسے اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔

لڑکی کی شکایت پر پولیس نے تحقیقات کیں تو معلوم ہوا کہ اس کی عصمت دری کرنے والوں میں بنگالی لڑکے کے علاوہ اس کا 28 سالہ پاکستانی دوست اور ایک اماراتی شخص شامل تھا۔ عدالت کو بتایا گیا کہ یہ تینوں افراد نشے میں دھت تھے اور انہوں نے گاڑی کی پچھلی سیٹ پر لڑکی کو باری باری زیادتی کا نشانہ بنایا۔

’اسے مار کر اِس کی لاش کتوں کو ڈال دو‘ سعودی لڑکی کی ایک ایسی تصویر منظر عام پر کہ سعودی شہریوں نے گالیاں نکالنے کا ریکارڈ توڑ دیا، تصویر میں ایسا کیا تھا؟ جان کر آپ بھی دنگ رہ جائیں گے

لڑکی نے عدالت کو بتایا کہ جب اس کے بنگالی دوست نے اس کی عصمت دری کی کوشش کی تو اس نے مزاحمت کی جس پربنگالی نے فون چھین کر اسے گاڑی سے باہر نکال دیا۔ لڑکی کا کہنا تھا کہ پاس ہی ایک اور گاڑی کھڑی تھی اور باقی دو افراد نے اسے اس گاڑی میں بیٹھنے کو کہا۔ متاثرہ لڑکی نے بتایا کہ کچھ دیر بعد بنگالی لڑکا اس گاڑی میں آیا اور زبردستی اس کی آبروریزی کی۔ اس کے بعد دیگر دونوں افراد بھی باری باری آئے اور اس کی عصمت دری کی، جس کے بعد وہ اسے گھر چھوڑگئے۔

لڑکی نے اپنے ساتھ پیش آنے والا ہولناک ماجرہ اپنے والدین کے سامنے بیان کیا جو اسے پولیس سٹیشن لے گئے۔ پولیس نے جلد ہی تینوں ملزمان کو گرفتار کرلیا اور ان کے خلاف مقدمے کا آغاز کردیا گیا۔ ملزمان نے موقف اختیار کیا کہ انہوں نے لڑکی کی زبردستی آبرو ریزی نہیں کی بلکہ یہ سب کچھ اس کی رضامندی سے ہوا۔ عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد تینوںملزمان کو قصور وار قرار دیا اور ان میں سے ہر ایک کو 1 سال قید کی سزا سنادی۔ سزا مکمل ہونے پر پاکستانی اور بنگالی کو ملک بدر کردیا جائے گا۔

مزید :

عرب دنیا -