خواتین کی گرفتار ی بلوچستان میں اشتعال اور احساس محرومی کو مزید تقویت دے گی: ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ

خواتین کی گرفتار ی بلوچستان میں اشتعال اور احساس محرومی کو مزید تقویت دے گی: ...
خواتین کی گرفتار ی بلوچستان میں اشتعال اور احساس محرومی کو مزید تقویت دے گی: ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ

  



کوئٹہ (این این آئی) نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر سابق وزیراعلیٰ بلوچستان ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ نے آواران سے چار خواتین کی گرفتاری،اسلحہ و بارودی اشیاء کی برآمدگی کو انتہائی مضحکہ خیز، شرمناک عمل قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس قسم کے غیر انسانی، غیر جمہوری، غیر سنجیدہ اور غیر ذمہ دارانہ اقدامات اور منفی رویوں سے بلوچستان معاملات،حالات اور بلوچستان کے مسئلے کا حل مزید پیچیدہ ہوگا، ایسے اقدامات نفرتوں میں مزید اضافے کا موجب ہونگے خواتین کی گرفتار ی بلوچستان میں اشتعال اور احساس محرومی کو مزید تقویت دے گی.

انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں مسخ شدہ لاشوں کی برآمدگی، لاتعداد نوجوانوں کی جبری گمشدگی، ماورائے آئین و قانون اقدامات پہلے ہی ایک انسانی بحران اور المیے کو جنم دے چکے ہیں لیکن اب بلوچ خواتین کی گرفتار ی اور انہیں دہشتگرد ثابت کرنے کی کوششیں انتہائی قابل مذمت عمل ہے،مذکورہ اقدام سے پہلے زخم خوردہ معاشرے کےزخموں کوکرید نے اورنمک پاشی کےمترادف ہے.اُنہوں نےمطالبہ کیا کہ گرفتار خواتین کوفوری طورپررہااوراس قسم کے اشتعال انگیز اقدامات کے اصل کرداروں کے خلاف سخت کارروائی عمل میں لائی جائے۔

مزید : علاقائی /بلوچستان /کوئٹہ


loading...