حکومت کا روزگار کی صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے لیبر فورس سروے کرانے کا فیصلہ 

  حکومت کا روزگار کی صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے لیبر فورس سروے کرانے کا ...

  

       اسلام آباد (آن لائن)تحریک انصاف حکومت نے روزگار کی صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے لیبر فورس سروے کرانے کا فیصلہ کر لیاوفاقی حکومت نے کورونا کی عالمی وباء کے دوران معاشی سرگرمیاں متاثر ہونے کی وجہ سے پاکستان میں بے روزگار ہونے والے20.6ملین افراد میں سے 80فیصد سے زائد کے دوبارہ برسر روزگار ہونے کا دعویٰ کیا ہے،وزات پلاننگ اینڈ ڈیویلپمنٹ کے مطابق تحریک انصاف کی حکومت نے صرف ایک سال میں  2.32 ملین آسامیاں پیدا کیں دستاویزات میں مذکورہ اسامیوں پر بھرتیوں کی تفصیلات واضح نہیں کی گئیں وزات کے مطابق  پہلی بار ضلعی سطح پر روزگار کی حقیقی صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے لیبر فورس سروے کروا رہی ہے تفصیلات کے مطابق وزات پلاننگ اینڈ ڈیویلپمنٹ نے سرکاری دستاویزات میں دعوی کیا ہے کہ کورونا وائرس کے دوران بے روزگار ہونے والے افراد کی بڑی تعداد حکومتی پالیسیوں کی وجہ سے دوبارہ روزگار کے مواقع حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئی ہے دستاویزات کے مطابق کورونا کے دوران کل 20.6ملین افراد  نوکریوں سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے جن میں سے 18.4ملین کو دوبارہ روزگار مل چکا ہے وزات پلاننگ نے  صرف ایک سال میں  2.32 ملین آسامیاں پیدا کرنے کا بھی دعوی ٰکیا ہے،سرکاری دستاویزات میں یہ بات واضح نہیں کی گئی کہ ان آسامیوں پر تعیناتیاں بھی ہوئی ہیں یا نہیں،دوسری جانب  وفاقی حکومت نے لیبر فورس سروے 2020-21کا دائرہ کار صوبوں سے بڑھا کر ضلعی لیول تک کیا ہے جس کے اعدادو وشمار جمع کیے جا رہے ہیں،وزات پلاننگ کے مطابق آخری بار لیبر فورس سروے سال 3سال قبل کیا گیا تھا جس میں صوبوں اور وفاقی کے لیول کے اعداد و شمار شامل تھے،پاکستان بیورو آف شماریات کے تحت ہونے والے سروے میں پہلی بار صوبوں کو پابند کیا گیا ہے کہ وہ ضلعی سطح پر لیبر کی تعداد،بیرروزگاری کی شرح اور برسر روزگار افراد کی تفصیلات جمع کرائیں۔

سروے فیصلہ

مزید :

پشاورصفحہ آخر -