پی ڈی ایم کا مہنگائی مارچ سے قبل کنونشن، جلسے، سیمینار کرانے کا اعلان 

  پی ڈی ایم کا مہنگائی مارچ سے قبل کنونشن، جلسے، سیمینار کرانے کا اعلان 

  

      اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ(پی ڈی ایم) کی سٹیئرنگ کمیٹی نے مہنگائی مارچ سے قبل چاروں صوبوں میں کنونشن،جلسے اورسیمینار منعقدکرنے کا اعلان کردیا ہے۔پی ڈی ایم سٹیئرنگ کمیٹی اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ترجمان حافظ حمد اللہ نے کہا کہ اسلام آباد پہنچنے کے بعد فیصلہ ہوگا کہ کتنے دن رکنا ہے،حکومت میں جھوٹے ترجمانوں کا جھوٹا ٹولہ ہے، 23مارچ قومی دن ہے تو کیا ہم قوم سے علیحدہ مخلوق ہیں؟ ملک میں امن و امان کی صورتحال خراب، معیشت تباہ ہوچکی،عمران خان کی صورت میں قوم کو کورونا سے خطرناک بیماری لگی ہوئی ہے،حکومت کی صورت میں ایک وبا ملک پر مسلط ہے،پرانا اورقائداعظم کا پاکستان کہیں نظرنہیں آرہا، تمام بحرانوں کا حل سلیکٹڈ حکومت کا خاتمہ ہے، ملک میں جلد ازجلد شفاف الیکشن چاہتے ہیں، آئین کے مطابق مقننہ اوراسٹیبلشمنٹ کام کریں گے توملک مستحکم ہوگا۔منگل کو اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک مومنٹ(پی ڈی ایم) کی سٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس کنونیئر شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت اسلام آباد میں ہوا،جس میں ڈاکٹر جہانزیب جمالدینی، میر کبیر شاہی، احمد خان جدون،عبدالرحیم زیارت وال اورترجمان پی ڈی ایم حافظ حمد اللہ نے شرکت کی۔اجلاس میں مہنگائی  مارچ اور صوبائی اجلاسوں کی حکمت عملی پر مشاورت کی گئی۔اجلاس میں پی ڈی ایم کی تحریک کو موثر بنانے اور کارکنوں کو متحرک کرنے پر غور کیا گیا۔ سٹیئرنگ کمیٹی کی سفارشات پی ڈی ایم کے آئندہ سربراہی اجلاس میں پیش کی جائیں گی۔اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ترجمان پی ڈی ایم حافظ حمد اللہ نے کہا کہ پی ڈی ایم کی سٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس ہوا،اجلاس میں مختلف جماعتوں کے نمائندوں نے شرکت کی،اس دوران مہنگائی مارچ کے حوالے سے حکمت عملی پر غور ہوا۔حافظ حمد اللہ نے کہا کہ چاروں صوبوں سے کیسے قافلے اسلام آباد پہنچیں گے؟ عوام کو اکٹھا کرنے کے امور، انتظامات کے طریق کار، نوعیت اور شکل کیا ہوگی اس پر غور ہوا جبکہ چاروں صوبوں میں ورکرز کنونشن ہونگے، البتہ تاریخوں کو حتمی شکل نہیں دی گئی،میاں شہباز شریف پنجاب میں پی ڈی ایم کا اجلاس طلب کریں گے اور تاریخ بتائیں گے، کراچی میں بھی کنونشن ہوگا اور اویس نورانی اجلاس بلائیں گے۔انہوں نے کہا کہ 23مارچ کو ہم نے اسلام آباد پہنچنا ہے یہ فیصلہ تو ہو گیا ہے،حکومت میں جھوٹے ترجمانوں کا جھوٹا ٹولہ ہے، یہ کہتے ہیں 23مارچ قومی دن ہے تو کیا ہم قوم سے علیحدہ مخلوق ہیں۔حافظ حمداللہ نے کہا کہ جمہوریت کے لئے لاکھوں لوگ آئیں گے اس ملک میں آئین ہے نہ ہی جمہوریت، اسلام آباد پہنچنے کے بعد فیصلہ ہوگا کہ کتنے دن رکنا ہے،اب پوری پی ڈی ایم ایک جماعت بن چکی ہے۔حافظ حمد اللہ نے کہا کہ پرانا اورقائداعظم کا پاکستان کہیں نظرنہیں آرہا، تمام بحرانوں کا حل سلیکٹڈ حکومت کا خاتمہ ہے، ملک میں جلد ازجلد شفاف الیکشن چاہتے ہیں، آئین کے مطابق مقننہ اوراسٹیبلشمنٹ کام کریں گے توملک مستحکم ہوگا، سٹیئرنگ کمیٹی کا اجلاس مہنگائی مارچ کی تیاریوں کے حوالے سے تھا جبکہ قووم چاہتی ہے موجودہ سلیکٹڈ حکومت گھر جائے۔انہوں نے کہا کہ23مارچ کومہنگائی مارچ کیسے کامیاب بناناہے، عوام کو آگاہی فراہم کرنے کیلئے ہمارے پاس ساڑھے 3ماہ ہیں۔انہوں نے کہا کہ کوئٹہ میں پی ڈی ایم کی 8جماعتیں ذمہ داری اداکریں گی، محموداچکزئی کی سربراہی میں صوبائی سطح پر کوئٹہ کنونشن ہوگا، پشاورکے کنونشن میں حکمت عملی مولاناصاحب کی ذمہ داری ہے۔اسلام آباد میں مرکزی کنونشن کی ذمہ داری بھی مولانا فضل الرحمان نے لی ہے،مولانا فضل الرحمان وکلا اور بار کونسلز سے گفتگو کرینگے،اسلام آباد کے کنونشن میں تمام شعبہ ہائے زندگی کے لوگ شریک ہونگے،سول سوسائٹی، صحافی، طلبہ سمیت ہر خاص و عام کو شرکت کی دعوت دی جائیگی۔انہوں نے مزید کہا کہ ملک میں امن و امان کی صورتحال خراب ہوچکی ہے،ملک کی معیشت تباہ ہوچکی،عمران خان کی صورت میں قوم کو کورونا سے خطرناک بیماری لگی ہوئی ہے اوریہ حکومت ایک خطرناک بیماری سے کم نہیں ہے،اس حکومت کی صورت میں ایک وبا ملک پر مسلط ہوئی ہے،لوگ دعائیں مانگ رہے ہیں کہ حکومت ختم ہوجائے۔ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے حافظ حمد اللہ نے کہا کہ آزادی مارچ کا فیصلہ جمعیت علمائے اسلام کا تھاجبکہ لانگ مارچ کا فیصلہ 8 جماعتوں کا ہے

پی ڈی ایم

مزید :

صفحہ اول -