حضرت شاہ رکن عالم ؒکا عرس 10دسمبر سے شروع، انتظامات فائنل

حضرت شاہ رکن عالم ؒکا عرس 10دسمبر سے شروع، انتظامات فائنل

  

 ملتان ( سٹی رپورٹر)شیخ الاسلام حضرت شاہ رکن عالم رحمتہ اللہ علیہ کا 708 واں 3 روزہ عرس مبارک 10 دسمبر سے شروع ہوگا۔اس سلسلے میں ضلعی انتظامیہ کی جانب سے 3 روزہ عرس تقریبات کے انتظامات مکمل کرلئے گئے ہیں۔عرس کے سلسلے میں ڈپٹی کمشنر  عامر کریم خان کی زیر صدارت سرکاری اداروں کا اجلاس گزشتہ روز ڈپٹی کمشنر آفس میں منعقد ہوا۔اجلاس (بقیہ نمبر36صفحہ10پر)

میں متعلقہ محکموں کی جانب سے تفصیلی بریفننگ بھی دی گئی۔ڈپٹی کمشنر عامر کریم خاں نے کہا کہ زائرین کی رہائش اور عارضی واش رومز کے بھی انتظامات کئے جائیں گے جبکہ عرس کے تینوں دن تمام ادارے اپنے خصوصی کیمپ لگائیں گے۔عامر کریم خان نے کہا کہ ریلوے اسٹیشن سے دربار حضرت شاہ رکن عالم تک خصوصی شٹل سروس چلائی جائے گی اور عرس کے تینوں روز درباروں اور ملحقہ رہائش گاہوں میں سکیورٹی الرٹ رہے گی۔ عامر کریم خان نے بتایا کہ زائرین کی کورونا و پولیو ویکیسینیشن کے حوالے سے خصوصی کیمپ لگائیں گے۔زائرین کی حفاظت کیلئے جامع سکیورٹی و ٹریفک پلان تشکیل دیکر انٹر سٹی ٹرانسپورٹ  بھی چلائی جائے گی۔ڈپٹی کمشنر نے ہدایت کی کہ ویسٹ مینجمنٹ کمپنی صفائی کے مثالی انتظامات یقینی بنائے تاکہ سندھ سے آنیوالے زائرین کو اچھا تاثر دیا جاسکے۔قبل ازیں ایس ایس پی آپریشنز شائستہ ندیم نے سکیورٹی پلان پر بریفنگ دی۔دریں اثنائڈا ئریکٹر جنرل پی ایچ اے سید شفقت رضا کی ہدایت پر حضرت شاہ رکن عالم کی تین روزہ عرس کے سلسلے میں آفیسران اور ملازمین کی ڈیوٹیاں تفویض کر دی گئی۔دس دسمبر سے شروع ہو نیوالی تقریبات میں الیکٹر یشنز،مالیوں اور سینٹری ورکرز ذمہ داریاں سر انجام دیں گے   ڈائر یکٹر ایڈمن اینڈ فنانس نے ملازمین اور افسران کا روسٹر جاری کرتے ہوئے کہا کہ تینوں دن ملازمین ڈیوٹیاں سر انجا م دیں گے قلعہ کہنہ قاسم باغ اور ابن قاسم پارک تزئین و آرائش شروع کر دی گئی ہے۔دریں اثناء پنجاب ٹیچرز یونین کے سینئر نائب صدر پنجاب رانا الطاف حسین نے کہا ہے کہ محکمہ تعلیم ملتان کی جانب سے سالانہ عرس مبارک کے موقع پر زائرین کی ملتان آمد کے موقع پر مرد و خواتین اساتذہ کی ڈیوٹیاں لگائی گئیں تو پنجاب ٹیچرز یونین احتجاج پر مجبور ہو جائے گی ہر سال کی طرح امسال بھی سالانہ عرس مبارک کے موقع پر ایک ہفتہ کے لئے تعلیمی ادارے بند کئے جائیں گے جہاں پر سندھ سمیت دیگر دور دراز کے علاقوں سے آنے والے زائرین کا قیام وطعام ہو گا ہمیشہ کی طرح زائرین کے قیام و طعام کی وجہ سے ایک ہفتہ کے دوران جہاں دن رات بجلی چلے گی وہاں زائرین کے قیام وطعام کے باعث سکولز میں اکثر اشیا ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہو جاتی ہیں ان کا ذمہ دار کون ہوگا بجلی کے دن رات چلنے اور اشیا کی ٹوٹ پھوٹ اور گملوں کے توڑے جانے کی وجہ سے تمام اضافی اخراجات سکولز ہیڈ ماسٹر ز کو اپنی جیب سے بھرنے پڑتے ہیں محکمہ اوقاف کو چاہیئے کہ وہ زائرین کے قیام و طعام کے لئے الگ جگہ کا خود انتظام کرے تعلیمی اداروں پر بوجھ نہ ڈالے جس کی وجہ سے طلبہ و طالبات کی تعلیم متاثر ہو تی ہے۔

انتظامات فائنل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -