پریانتھا کمارا کے قتل کے وقت دو ہزار ورکرز فیکٹری میں موجود تھے ، پولیس تحقیقات میں انکشاف

پریانتھا کمارا کے قتل کے وقت دو ہزار ورکرز فیکٹری میں موجود تھے ، پولیس ...
پریانتھا کمارا کے قتل کے وقت دو ہزار ورکرز فیکٹری میں موجود تھے ، پولیس تحقیقات میں انکشاف

  

سیالکوٹ ( ڈیلی پاکستان آن لائن )  سیالکوٹ میں پریانتھا کمارا کے قتل کے وقت فیکٹری میں تین سو خواتین سمیت دو ہزار ورکرز فیکٹری میں موجود ہونے کا انکشاف ہوا ہے ۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق پولیس تحقیقات میں کہا گیا کہ واقعے کے وقت فیکٹری میں تین سو خواتین اور 1700 مرد موجود تھے ، خواتین کے تھری بلاک میں تھیں ، پریانتھا کے نائب کے طور پر کام کرنے والا وحید بھی جھگڑے کے وقت پریانتھا کے ہمراہ تھا ، صورتحال بگڑتی دیکھ کر وحید ہی پریانتھا کو تیسری منزل پر اس کے دفتر لے گیا اور مالک شہباز کے ساتھ حالات کو سنبھالنے کی کوشش کرنے لگا۔

وحید نے صورتحال بگڑتی دیکھ کر خواتین ورکرز کو بلاک کے تھری سے نکال کر عمارت کے عقبی حصے میں منتقل کیا جس کے باعث خواتین محفوظ رہیں ۔ اشتعال بڑھتا دیکھ کر وحید  پریانتھا کمارا کو چھت پر لے گیا اور کہا کہ اپنی سمت سے دروازے کو لاک کر دے مگر بد قسمتی سے چھت کی جانب دروازے کا لاک نہیں تھا ۔

پولیس کے مطابق فیکٹری میں دو ہزار ورکرز کی موجودگی بائیو میٹرک مشین کے ڈیٹا سے ہوئی ہے ،  فیکٹری سے لئے گئے 10 ڈی وی آر اور بائیو میٹرک مشینیں فرانزک لیب بھجوا دی گئی ہیں ، فرانز ک رپورٹ آنے کے بعد ویڈیوز اور بائیو میٹرک حاضری کو شواہد کا حصہ بنایا جائے گا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -