ایمازون میں ملازمین کے ساتھ کیا سلوک کیا جاتا ہے؟ سابق ملازمہ کا ایسا انکشاف کہ یقین نہ آئے

 ایمازون میں ملازمین کے ساتھ کیا سلوک کیا جاتا ہے؟ سابق ملازمہ کا ایسا ...
 ایمازون میں ملازمین کے ساتھ کیا سلوک کیا جاتا ہے؟ سابق ملازمہ کا ایسا انکشاف کہ یقین نہ آئے

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) ایمازون دنیاکی سب سے بڑی ای کامرس کمپنی ہے، جس کا مالک جیف بیزوس 201ارب ڈالر کی دولت کے ساتھ دنیا کا دوسرا امیر ترین شخص ہے، تاہم اس کمپنی میں ملازمین کے ساتھ کیا سلوک کیا جاتا ہے؟ ایمازون کی ایک سابق خاتون ملازم نے اس حوالے سے ایسا انکشاف کر دیا ہے کہ سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے۔ دی سن کے مطابق اس سابق ملازم نے اپنے ٹک ٹاک اکاﺅنٹ @_haleeeپر پوسٹ کی گئی چند ویڈیوز میں بتایا ہے کہ کس طرح ایمازون میں ملازمین کا استحصال کیا جاتا ہے۔

خاتون بتاتی ہے کہ وہ ایمازون کے ویئرہاﺅس میں کام کرتی رہی ہے۔ وہاں ملازمین کو مختلف نوعیت کی گیمز کھیلنے کو کہا جاتا ہے جس کے ذریعے ان کی پیداواری صلاحیت بڑھتی ہے۔ ملازمین میں مقابلے کی ایک فضاءقائم کی جاتی ہے اور جیتنے والے کو پوائنٹس دیئے جاتے ہیں، جو بعد زاں خریداری کے لیے واﺅچر کے طور پر کام کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ انعام میں شرٹس وغیرہ بھی دی جاتی ہیں۔ ایمازون ویئرہاﺅس کا ماحول ایک جیل کا سا ہوتا ہے جہاں انتہائی کم معاوضے پر 12گھنٹے کام لیا جاتا ہے۔ اگر آپ مجھے ایمازون میں نوکری کو 10میں سے کوئی نمبر دینے کو کہیں تو میں ’منفی100‘ نمبر دوں گی۔ یہ میری زندگی کی بدترین جاب تھی جو میں نے ایمازون میں کی۔ معاوضہ کم، کام بہت زیادہ۔ وہ لوگ ملازمین کے ساتھ مشین جیسا سلوک کرتے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -