اسلامی تعاون تنظیم کے زیر اہتمام افغان مسئلے پر 17 دسمبر کو اسلامی ممالک کے وزراء خارجہ کا غیر معمولی اجلاس

اسلامی تعاون تنظیم کے زیر اہتمام افغان مسئلے پر 17 دسمبر کو اسلامی ممالک کے ...
 اسلامی تعاون تنظیم کے زیر اہتمام افغان مسئلے پر 17 دسمبر کو اسلامی ممالک کے وزراء خارجہ کا غیر معمولی اجلاس

  

جدہ (محمد اکرم اسد) اسلامی تعاون تنظیم کے زیر اہتمام افغان مسئلے پر 17 دسمبر کو اسلامی ممالک کے وزراء خارجہ کا غیر معمولی اجلاس اسلام آباد  میں منعقد ہوگا، اس وقت افغا نستان میں بنیادی سہولیات کا فقدان ہے ۔ سعودی عرب نے نومبر میں اس  صورتحال  کی طرف توجہ دلائی تھی پاکستان نے ہمیشہ افغانستان کے معاملے پر بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ہے ان خیالات کا اظہار او آئی سی میں پاکستان کے مستقل سفیر رضوان سعید شیخ نے جدہ میں میڈیا سے ملقات میں کیا۔

افغانستان میں صورتحال بگڑ رہی ہے ۔تین کروڑ کی آبادی میں سے 60 فیصد بھوک کا شکار ہیں  اور دیگر سہولیات سے  بھی محروم ہیں دوسری طرف سردی بڑھ گئی ہے، بچے اور خواتین اس صورتحال سے پریشان ہیں اور خطرہ ہے کہ پریشان آفغان آبادی نقل مکانی کرے جو پڑوسی ممالک  میں بھی مسئلہ پیدا کرے گا ماضی میں پاکستان میں افغاننستان سے نقل مکانی سے پاکستان میں دیشت گردی ہوئی ہے اور ہزاروں افراد شہید ہوئے،  پاکستان کی افوج نے اپنی بہادری سے سے اس پر قابو پایا ہے  ۔ ایک مسئلہ اہم ہے کہ اسطرح کی نقل مکا نی سے پڑوس میں امن و امان و علاقائی مسئلہ ہوتا ہے ۔

انہوں نے کہا کہ 1980 میں بھی او آئی سی کا پہلا اجلاس بھی اففانستان پر ہی ہوا تھا یہ او آئی سی کا 17 واں غییر معمولی  اجلاس ہے  ۔ یہ اجلاس مسلم امہ کی مشترکہ آواز ہے افغان مسئلے کو حل کرنے کیلئے ۔نیز او آئی سی ممالک افغانستان کی بھر پور مدد کرسکیں ۔پاکستان ہمیشہ مسئلے کے حل کیلئے سرگرم ہے اس سلسلے میں وزیر اعظم نے خود دوست ممالک کے دورے کرکے افغانستان پر رائے عامہ ہموار کی ہے ۔یہ کانفرنس سعودی عرب کی رائے کے مطابق بلائی گئی ہے۔ او آئی سی کی مختلف کمیٹیاں مستقل طور پر   افغان صورتحال اور انسانی مسائل پر توجہ رکھے ہوئے ہیں پاکستان نے خوشدلی سے اس  غیر معمولی اجلاس کی میزبانی قبول کی ہے۔

مزید :

عرب دنیا -