داستان مصر کے مشہور شاعر، ادیب اور سیاستدان محمد حسین ہیکل کی

داستان مصر کے مشہور شاعر، ادیب اور سیاستدان محمد حسین ہیکل کی
داستان مصر کے مشہور شاعر، ادیب اور سیاستدان محمد حسین ہیکل کی

  

تحریر: آغا نیاز احمد مگسی 

آج ہم آپ کو مصر کے مشہور شاعر، ادیب اور سیاستدان محمد حسین ہیکل کی داستانِ فن سنائیں گے ۔  محمد حسین ہیکل 20 اگست 1888ء بمطابق 12 ذو الحج 1305ھ میں حنین الخضراء مصرمیں پیدا ہوئے۔قاہرہ  کے لا ءسکول الخدویہ سے قانون کی تعلیم حاصل کی اور 1909 میں گریجویشن مکمل کی 1912ءمیں فرانس میں سوربون یونیورسٹی سے قانون میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی، 10 سال تک ایک وکیل کے طور پر کام کیا، صحافت میں بھی کارہائے نمایاں انجام دیئے، احمد لطفی کے خیالات سے متاثر تھے۔

سیاسی زندگیکا ذکر کریں تو محمد حسین ہیکل 1923 میں اس قانون ساز اسمبلی کے وزیر تعلیم رہے جس نے صدارتی نظام کا قانون تیار کیا جو مصر کا پہلا آئین شمار کیا جاتا ہے اس کے بعد 1940 سے 1942 تک دوبارہ وزیر رہے اور 1945 میں سماجی امور کی وزارت دی گئی۔ لبرل پارٹی کے ڈپٹی اور صدر کے عہدوں پر کام کرتے رہے۔ سعودی عرب میں جب عرب ریاستوں کی لیگ کے چارٹر پر دستخط کیے گئے تو اقوام متحدہ میں مصری وفد کے سربراہ کے طور پر شامل تھے۔

محمد حسین  ہیکل 68برس کی عمر میں  سوموار 5 جمادی الاول 1376ھ بمطابق 8 دسمبر 1956ء  کو اس دنیا سے رخصت ہوئے۔آپ کی تالیفات میں" روايۃ سہيلہ فی الظلمۃ - 1914ء،سير حياۃ شخصيات مصريۃ وغربيۃ  1929ء،حياۃ محمد - 1933ءفی منزل الوحی - 1939ء،مذکرات فی السياسۃ المصريہ 1951 / 1953ء،الصديق ابو بکر،الفاروق عمر - 1944 / 1945ء،عثمان بن عفان - 1968ء،ولدی،يوميات باريس،الامبراطوريہ الإسلاميہ،  والأماکن المقدسہ - 1964ء،قصص سعوديہ قصيرہ - 1967ء،فی اوقات الفراغ،الشرق الجديد" اور "روايۃ زينب" شامل ہیں ۔

مزید :

ادب وثقافت -