غزہ کی پٹی میں حماس کی کھودی گئی سرنگوں میں پانی چھوڑ دیاجائے،صہیونی وزیر کی تجویز

غزہ کی پٹی میں حماس کی کھودی گئی سرنگوں میں پانی چھوڑ دیاجائے،صہیونی وزیر کی ...

مقبوضہ بیت المقدس (اے این این)فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی میں فلسطینی مجاہدین کی جانب سے دفاع کے لیے کھودی گئی سرنگیں اسرائیلی سیاسی حلقوں میں گرما گرم موضوع ہیں اور ان سرنگوں کی تباہی کے لیے طرح طرح کی تجاویز پیش کی جا رہی ہیں۔ ایک صہیونی بہادر وزیر نے تجویز دی ہے کہ غزہ میں کھودی گئی سرنگوں کو تباہ کرنے کے لیے مصری فوج کو رول ماڈل بناتے ہوئے غزہ میں پانی چھوڑ دیا جائے۔ جس طرح پچھلے برس غزہ کی پٹی کی سرحد پر کھودی گئی سرنگوں کو مسمار کرنے کے لیے مصری فوج نے سمندر کا پانی چھوڑ دیا تھا، اسی طرح غزہ کی پٹی کے اندر موجود سرنگوں کو تباہ کرنے کے لیے پانی کے ریلے چھوڑے جاسکتے ہیں۔فلسطینی میڈیا رپورٹس کے مطابق یہ تجویز اسرائیل کے وزیر برائے توانائی نے مقبوضہ فلسطین کے جنوبی شہر بئر سبع میں ایک کلچر سینٹر میں تقریب سے خطاب کے دوران پیش کی۔انہوں نے کہا کہ غزہ کی پٹی میں حماس کی کھودی گئی سرنگوں کی نشاندہی اور انہیں تباہ کرنے کے لیے پانی چھوڑ دیا جانا چاہیے۔ اس سلسلے میں مصری فوج کی کارروائی ہمارے لیے رول ماڈل ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ حماس دھڑا دھڑ سرنگیں کھودے جا رہی ہے مگرہم اس پر صبر کا دامن پکڑے ہوئے ہیں۔ میں یہودی شہریوں پر زور دیتا ہوں کہ وہ پرسکون رہیں اور دانش اور حکمت سے فلسطینی سرنگوں اور فلسطینی عسکری گروپوں کا مقابلہ کریں۔اشٹائنٹز کا کہنا تھا کہ ہمارے پاس غزہ کی سرنگوں کے کئی حل موجود ہیں۔ ان میں آسان حل مصرکے صدر عبدالفتاح السیسی کا اختیار کردہ فارمولہ ہے جس کے تحت غزہ کی پٹی کی سرحد پر کھودی گئی سرنگوں کو پانی چھوڑ کر تباہ کیا گیا تھا۔انہوں نے کہا کہ غزہ کی سرنگوں کے معاملے پر تل ابیب اور قاہرہ کے درمیان مکمل ہم آہنگی پائی جاتی ہے۔ مصری فوج نے اسرائیل کے مطالبے پر غزہ کی سرحد پر سرنگیں مسمار کی تھیں۔ پانی چھوڑ کر سرنگیں مسمار کرنے کا طریقہ زیادہ مناسب اور کار گر ثابت ہوا۔

مزید : عالمی منظر