کرک میں ایک شخص دیرینہ دشمنی کی بھنٹ چڑھ گیا

کرک میں ایک شخص دیرینہ دشمنی کی بھنٹ چڑھ گیا

کرک (بیورورپورٹ) دیرینہ دشمنی کا شاخسانہ، پچاس سالہ شخص کو مین بازار خرم محمد زئی میں قتل کیا گیا۔ واردات کے بعد قاتل فرار ہونے میں کامیاب۔ تفصیلات کے مطابق ستائیس اٹھائیس سال اپنے آبائی گاؤں ورغہ بانڈہ سے دشمنی کی وجہ سے خاندان سمیت ہجرت کرکے خرم محمد زئی میں آباد ہونے والے خضر حیات پر آپنے آبائی علاقہ میں قتل کی دعویداری ہوئی۔ جیل جانے اور الزام سے بری ہونے کے بعد پورے خاندان نے یہاں سے ہجرت کر لی۔ مگر دشمنی نے انکا پیچھا نہیں چھوڑا۔ مرغی فارم ہاؤس کا کاروبار کرنے کیوجہ سے وہ علاقہ بھر میں گھومتا پھرتا تھا۔ دو ڈھائی ماہ قبل ان پر چوغئے (بانڈہ داؤد شاہ) میں قاتلانہ حملہ ہوا۔ موٹر سائیکل کو کوئی گولیاں لگیں۔ مگر وہ خود معجزانہ طور پر بچ نکلنے میں کامیاب ہو گیا۔ گزشتہ روز صبح کے وقت جب وہ مین بازار خرم سے سودا سلف لیکر اپنی گاڑی میں بیٹھنے لگا۔ تو گاڑی کے پیچھے چھپے کمبل پوش شخص نے انکی کنپٹی اور سینے پر یکے بعد دیگرے چھ سات فائر کئے۔ جس سے خضر حیات موقع پر جاں بحق ہو گیا۔ قاتل لڑکھڑاتا ہوا جانب شمال آبادی سے ہوتا ہوا پہاڑی سلسلے میں غائب ہو گیا۔ تھانہ خرم محمد زئی میں مرحوم کے صاحبزادے صابر حیات کی رپورٹ پر ممتاز عالم ولد فرید خان ساکن ورغہ بانڈہ کیخلاف مقتول باپ کے قتل کو گزشتہ روز بعد از نماز عصر اپنے آبائی قبرستان میانڈی میں سپرد خاک کیا گیا۔ نماز جنازہ میں ہر طبقہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر