اجے دیوگن کی ’دریشام‘کا اثر،نوجوان کا محبوبہ قتل کر کے ثبوت مٹانے کا ہو بہو وہی طریقہ

اجے دیوگن کی ’دریشام‘کا اثر،نوجوان کا محبوبہ قتل کر کے ثبوت مٹانے کا ہو بہو ...
اجے دیوگن کی ’دریشام‘کا اثر،نوجوان کا محبوبہ قتل کر کے ثبوت مٹانے کا ہو بہو وہی طریقہ

  

ممبئی(مانیٹرنگ ڈیسک )بالی ووڈ اداکار اجے دیوگن کی ہٹ فلم ’دریشام‘ سے متاثر نوجوان نے محبوبہ کے قتل کے بعد ثبوت مٹانے کے لئے وہی وہی طریقہ استعمال کیا جو اجے دیوگن نے فلم میں اپنے خاندان کے بچانے کے لئے رچتے ہیں ۔ 

انڈیا ٹو ڈے کے مطابق پٹنا پولیس نے ویشالی کے رہائشی راجنیشن سنگھ نامی نوجوان کو گرفتار کیا ہے جس نے ایک ہفتہ قبل لڑکی شرستی جین کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا تھا ۔ مقتولہ لڑکی اندور کی رہنے والی ہے ، دونوں میں شادی کروانے والی ایک ویب سائٹ پر دوستی ہوئی تھی جبکہ نوجوان پہلے سے شادی شدہ تھا اور اس کے دو بچے بھی تھے ۔ لڑکی شادی کے لئے اندور سے ویشالی آ گئی تھی جبکہ شادی کے معاملے پر بحث میں تلخی ہونے پر نوجوان نے اسے قتل کر دیا تھا ۔

رجنیش نے قتل کیا تو اسے احساس ہوا کہ پولیس کسی نہ کسی طرح اس تک پہنچ جائے گی لہذا اس نے ثبوت غائب کرنے کے لئے اجے دیو گن کی فلم دریشام کا سہارا لیا ۔ نوجوان نے اجے دیو گن کے انداز میں ہی اپنا موبائل فون ٹرک کے اوپر پھینکا تاکہ میری لوکیشن معلوم نہ سکے لیکن یہ موبائل فون ٹرک پر گرتے ہی ٹوٹ گیا اور آخری لوکیش وہی رہ گئی ۔ جبکہ اس نے اپنی انتہائی قیمتی موٹرسائیکل بھی دریائے گنگا میں پھینک دی جیسا کہ اجے دیوگن ایک سین میں مقتول کی گاڑی کے ساتھ کرتا ہے ۔ نوجوان نے اعتراف جرم کرتے ہوئے مزید بتایا کہ میں نے وہاں 500روپے پر ایک کشتی کرایے پر لی اور گنگا کے بیچوں بیچ اپنا موٹر سائیکل پھینک دیا ۔

مزید : تفریح