پنجاب ہیلتھ کیئر کمشن عطائی ڈاکٹرزکے کلینک سیل نہیں کرسکتا ،ہائی کورٹ نے فیصلہ دے دیا

پنجاب ہیلتھ کیئر کمشن عطائی ڈاکٹرزکے کلینک سیل نہیں کرسکتا ،ہائی کورٹ نے ...
پنجاب ہیلتھ کیئر کمشن عطائی ڈاکٹرزکے کلینک سیل نہیں کرسکتا ،ہائی کورٹ نے فیصلہ دے دیا

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ نے قرار دیا ہے کہ پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کو عطائی ڈاکٹرز کے کلینک سربمہر کرنے کا اختیار حاصل نہیں ہے ۔عدالت نے عطائیوں کے خلاف کمشن میں قائم شکایت سیل کو بھی غیر قانونی قرار دے دیا ہے ۔مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ نے یہ فیصلہ متعدد کلینک سربمہر کرنے کے خلاف دائر مختلف درخواستوں پر جاری کیا۔فاضل جج نے12صفحات پر مشتمل اس تحریری فیصلہ میں قرار دیا ہے کہ متعلقہ ایکٹ کی دفعہ 9 کی ذیلی دفعہ ایک ہیلتھ کیئرکمیشن کو کلینک سربمہر کرنے کا اختیار نہیں دیتی، ہیلتھ کیئر کمیشن ایکٹ میں کمشن کو کسی قانونی خلاف ورزی پر صرف جرمانہ عائد کرنے کا اختیار دیا گیاہے۔ کمیشن کے سٹینڈنگ آرڈرز صرف اندرونی معاملات چلانے کے لئے ہیں، جنہیں تیسرے فریق کے خلاف استعمال نہیں کیا جا سکتا۔ سٹینڈنگ آرڈرز کے تحت عطائیوں کے خلاف قائم شکایت سیل غیرقانونی ہے۔ عطائیوں کے خلاف شکایت سیل قانون کے تحت بنایا جائے۔ فیصلے میں مزید قرار دیا گیا ہے کہ ہیلتھ کیئرکمیشن ایکٹ کی دفعہ 31سے لگتا ہے کہ یہ ایک ناقص قانون سازی ہے۔ عدالت ہیلتھ کیئرکمیشن کی صورت میں حکومت کی اچھی نیت کو سراہتی ہے۔ حکومت چاہے تو کمشن کو کلینک سربمہر کرنے کا اختیار دینے کے لئے ایکٹ میں ترمیم کر سکتی ہے۔ ایکٹ میں ترمیم تک کمیشن کسی کلینک کو سربمہر نہیں کر سکتا۔

مزید : لاہور