پٹواری اور سرکاری افسر کاگٹھ جوڑ،بھارتی فوج کو لاکھوں کا چونا لگا دیا

پٹواری اور سرکاری افسر کاگٹھ جوڑ،بھارتی فوج کو لاکھوں کا چونا لگا دیا

نیودہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی فوج خود کو دنیا کی طاقتور افواج میں شمار کرتی ہے اور اس کی خفیہ ایجنسی ’را‘خود کو دنیا کی ہوشیار ترین خفیہ ایجنسیوں میں، لیکن عالم یہ ہے کہ ایک پٹواری اور چند سرکاری افسران نے مل کر دنیا کی اس ہوشیار ایجنسی کی حامل طاقتور فوج کو ایسا چونا لگا دیا کہ اب شرم سے منہ چھپاتی پھر رہی ہے۔ ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق یہ پٹواری اور افسر باہم ملی بھگت سے ایسی زمین کا بھارتی فوج سے کرایہ وصول کرتے رہے جو دراصل آزاد کشمیر میں موجود تھی۔رپورٹ کے مطابق ایک سب ڈویڑنل ڈیفنس سٹیٹ آفیسر آر ایس چندر وینشی اور مقبوضہ کشمیر کے علاقے نوشہرہ کے پٹواری درشن کمار نے کچھ اور لوگوں کے ساتھ مل کر بھارتی فوج کو دھوکہ دینے کا منصوبہ بنایا اور جعلی کاغذات بنا کر فوج کو بھجوا دیئے۔ ان کاغذات میں جو زمین بتائی گئی وہ دراصل آزاد کشمیرمیں واقع تھی لیکن انہوں نے لکھا کہ یہ زمین بھارتی فوج کے زیراستعمال ہے لہٰذا اس کا کرایہ ادا کیا جائے۔ اس طرح انہوں نے فوج سے 6لاکھ بھارتی روپے (تقریباً 9لاکھ 32ہزار روپے) ہتھیا لیے۔ ٹائمز آف انڈیا کے مطابق 1969۔70کی جمع بندی کے مطابق جو زمین ان لوگوں نے بھارتی فوج کے زیراستعمال بتائی وہ خسرہ نمبر 3000، 3035،3041،3045تھی جو پاکستان میں موجود ہے۔سی بی آئی اور دیگر بھارتی تفتیشی ادارے اپنی فوج کے ساتھ ہونے والے اس فراڈ کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

مزید : صفحہ آخر


loading...