حافظ سعید کو نظر بند کر کے تحریک آزادی کشمیر کے قلب میں خنجر گھونپا گیا: ملی یکجہتی کونسل

حافظ سعید کو نظر بند کر کے تحریک آزادی کشمیر کے قلب میں خنجر گھونپا گیا: ملی ...

لاہور(سٹی رپورٹر)ملی یکجہتی کونسل کے مرکزی قائدین نے کہا ہے کہ بھارتی خوشنودی کیلئے حافظ محمد سعید و دیگر رہنماؤں کو نظر بند کر کے تحریک آزادی کشمیر کے قلب میں خنجر گھونپا گیا۔ ہمیں تحریک آزادی کشمیر کو مکمل طور پر سپورٹ کرنا اور تحریک آزادی کا پشتیبان بننا چاہئے۔حافظ محمد سعید کی نظربندی فی الفور ختم کی جائے۔ آج ملی یکجہتی کونسل کے اجلاس میں آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کیا جائے گا۔ حافظ محمد سعید ایک غیر متنازعہ شخصیت ہیں جن کے پایہ استقامت میں بھارت و امریکہ کے تمامتردباؤ کے باوجودکسی قسم کی لغزش نہیں آئی۔ملی یکجہتی کونسل سال 2017ء کو کشمیر کے نام کرنے کی حمایت کرتی ہے اور نظربندیوں کے باوجود اس مشن کو بھرپور انداز میں جاری رکھا جائے گا۔ بھارتی فلموں کی پاکستان میں نمائش پر پابندی لگائی جائے۔ ان خیالات کا اظہار ملی یکجہتی کونسل کے مرکزی سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ، نائب صدر ملی یکجہتی کونسل پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی، پیرسید ہارون علی گیلانی، علامہ ابتسام الہٰی ظہیر، قاری یعقوب شیخ،سید ضیاء اللہ شاہ بخاری، سردار محمد خاں لغاری، ابوالہاشم ربانی، سید لطیف الرحمن شاہ و دیگرنے حافظ محمد سعیدودیگر رہنماؤں کی نظربندی کیخلاف پریس کلب میں مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران کیا۔ ملی یکجہتی کونسل کے مرکزی سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کہاکہ پانچ فروری کو پوری قوم نے جس طرح کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کیا اس پر ہم پوری قوم کا شکریہ ادا کرتے ہیں تاہم اس موقع پر پوری قوم صدمہ کی کیفیت میں تھی کہ حافظ محمد سعید جو کہ ایک غیر متنازعہ شخصیت ہیں جن کے پایہ استقامت میں بھارتی وامریکی دباؤ کے باوجودکسی قسم کی لغزش نہیں آئی، انہوں نے قانون سے ہٹ کر کوئی اقدام نہیں کیااور وہ اقوام متحدہ کے چارٹر اور پاکستان کی قومی پالیسی کے مطابق کشمیریوں کی جدوجہد آزادی بھرپور انداز میں جاری رکھے ہوئے ہیں ‘ انہیں نظربند کر دیا گیا ہے۔انہوں نے کہاکہ پرویزمشرف نے نائن الیون کے بعد ایک ٹیلیفون کال پر اپنی زمین اور فضائیں امریکہ کے حوالے کر دیں۔ آج وہی امریکہ بھارت کو افغانستان کی سرزمین پاکستان کیخلاف استعمال کرنے کی شہ دے رہا ہے۔ حیرانگی کی بات ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ جس کی پالیسیوں اور فیصلوں کو امریکہ میں تسلیم نہیں کیا جارہا ہماری حکومت اس کے دباؤ پر حافظ محمد سعید و دیگر رہنماؤں کو نظربند کر رہی ہے۔ دنیا حیران ہے کہ پاکستانی حکمران اس قدر کمزور کیوں ثابت ہوئے ہیں؟۔ انڈیا پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کا کوئی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دے رہا لیکن ہماری حکومت اس کی خوشنودی کیلئے نظربندیاں کر کے بھارتی موقف کو مضبوط کر رہی ہے۔ حکومت کو ہوش کے ناخن لینے چاہئیں اور اپنی غلطیوں کی اصلاح کر کے ملکی سلامتی کو مدنظر رکھتے ہوئے پالیسیاں ترتیب دینی چاہئیں وگرنہ حکومت کیلئے مشکلات کھڑی ہوں گی۔ حافظ محمد سعید کی نظربندی ختم اور ان کی سرگرمیوں پرسے پابندی ہٹائی جائے۔آج ملی یکجہتی کونسل کے اجلاس میں اس سلسلہ میں احتجاجی تحریک کے آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔ اس اجلاس میں اہم فیصلے ہوں گے۔ گستاخ بلاگرز کو حکومت نے کھلا چھوڑ دیا ہے اور وہ علماء اور دینی قائدین جو دہشت گردی کیخلاف جنگ میں آپریشن ضرب عضب کی حمایت کر رہے ہیں انہیں فورتھ شیڈول میں شامل اور نظربندیاں کی جارہی ہیں‘ یہ روش درست نہیں ہے۔ انہوں نے کہاکہ بھارتی فلموں پر پابندی لگائی جائے۔ملی یکجہتی کونسل کے نائب صدر پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی نے کہاکہ برہان وانی کی شہادت کے بعدمقبوضہ کشمیر میں مظالم بہت بڑھ چکے ہیں ۔ حافظ محمد سعید نے سال 2017ء کو کشمیر کے نام کیا اور وہ ملک گیر سطح پر بھرپور مہم چلا رہے تھے کہ انہیں صرف بھارت کو خوش کرنے کیلئے نظربند کر دیا گیا۔ نریندر مودی جس نے پاکستان توڑنے کا اعتراف جرم کیا اس کے دباؤ پر محب وطن لیڈروں کی گرفتاری انتہائی شرم کا باعث ہے۔انہوں نے کہا کہ حافظ محمد سعید نے سال2017کشمیریوں کے نام کیا تا کہ اسکی آزادی کو یقینی بنایا جائے۔اسی طرح اپنے ساتھیوں کے خلاف سازشیں ناکام بنانی چاہیں لیکن ہمارا دل خون کے آنسو روتا ہے کیونکہ حکومت کشمیریوں کو راضی کرنے کی بجائے دہلی سرکار کو خوش کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔جو زخم اسلام آباد نے لگا یا اس کا تدارک کریں گے اور تحریک آزادی کشمیر کے خلاف سازشوں کو ناکام بنانے کے لئے کردار ادا کریں گے۔انہوں نے کہا حافظ محمد سعید اور دیگر رہنماؤں کی نظر بندی کے خلاف عدالت سے رجوع کریں گے۔ہدیۃ الھادی پاکستان کے سربراہ پیر سید ہارون علی گیلانی نے کہا کہ آج ملی یکجہتی کونسل کے اجلاس میں اہم فیصلے ہوں گے جو بھی مشترکہ لائحہ عمل بنے گا اس کے مطابق ملک گیر تحریک چلائیں گے۔جمعیت اہلحدیث کے ناظم اعلیٰ علامہ ابتسام الہیٰ ظہیر نے کہا کہ حافظ محمد سعید کی گرفتاری انتہائی قابل مذمت فعل ہے۔گستاخیاں کرنے والے بلاگرز کو گرفتار کیا جائے اور حافظ محمد سعید کو رہا کیا جائے۔نظریہ پاکستان رابطہ کونسل کے چیئرمین قاری یعقوب شیخ نے کہاکہ بیرونی دباؤ پر فیصلے کرنے کی بجائے خود مختار اور آزادریاست کی حیثیت سے فیصلے کئے جائیں۔بھارت پاکستان کا ازلی دشمن ہے اس سے کسی اچھائی کی توقع نہیں کی جاسکتی۔حکومت تحریک آزادی کشمیر کو تقویت دینے کے لئے حافظ محمد سعید اور ان کے دیگر رہنماؤں کو فی الفور رہا کرے۔متحدہ جمعیت اہلحدیث کے امیر سید ضیا ء اللہ شاہ بخاری نے کہا کہ بانی پاکستان نے کشمیر کو پاکستان کی شہہ رگ قرار دیا تھا۔ہمیں اسے غاصب بھارت کے قبضہ سے نجات دلانا ہے۔حافظ محمد سعید نے تحریک آزادی کشمیر میں تاریخی کردار ادا کیا انہوں نے قوم کی فکری رہنمائی کی لیکن افسوس کہ بھارتی دباؤ پر انہیں نظر بند کر دیا گیااور تحریک آزادی کے قلب میں خنجر گھونپا گیا ہے اس سے کشمیریوں کو اچھا پیغام نہیں گیا۔انہوں نے کہا کہ قائداعظم نے بھی تحریک چلائی تھی۔ایک مرتبہ بھی قانون شکنی نہیں کی اور دوسرا حافظ محمد سعید ہیں ان کی جماعت کے خلاف کوئی ایف آئی آر نہیں۔ملی یکجہتی کونسل حافظ محمد سعید کی نظر بندی کی بھر پور مذمت کرتی ہے۔ملی یکجہتی کونسل کے رہنماؤں سردار محمد خاں لغاری، ابوالہاشم ربانی، سید لطیف الرحمن شاہ و دیگرنے کہا کہ کشمیری پاکستان کا پرچم لہراتے ہوئے گولیاں کھا رہے ہیں،انکی لاشوں کو پاکستانی پرچم میں لپیٹ کر دفن کیا جا رہا ہے ۔مسئلہ کشمیر ہر فرد اور جماعت کا مسئلہ ہے۔ہم سب کو کشمیریوں کے دکھ اور درد میں شریک ہونا چاہئے۔حافظ محمد سعید کی نظربندی ختم کی جائے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...