حکومتی پالیسیوں پر تنقید مہذب ہونی چاہیے

حکومتی پالیسیوں پر تنقید مہذب ہونی چاہیے

جام پور (نمائندہ خصوصی)ڈپٹی سپیکر پنجاب اسمبلی سردار (بقیہ نمبر46صفحہ7پر )

شیر علی خان گورچانی نے کہاہے کہ اپوزیشن کو اپنی موجودگی کا احساس دلانے کے لئے حکومتی پالیسیوں پر تنقید کا حق ہے لیکن بلاجواز تنقید برائے تنقید سے جمہوریت پر حرف آتا ہے ٗ ماضی کا ڈکٹیٹر سیاستدانوں پر طنز کے نشتر چلاتا تھا اور پارلیمنٹ جیسے مقدس ایوان کے لئے غیر مہذب جیسے لفظ استعمال کرتا تھا اس لیئے جس طرح حکومت مسلسل تحمل کا مظاہرہ کرتی آرہی ہے اسی طرح اپوزیشن کو بھی احتجاج کے اپنے حق کے استعمال میں محتاط رویہ اختیار کرنا چاہیئے سردار شیر علی خان گورچانی نے اپنے ان خیالات کااظہار پنجاب اسمبلی میں اپنے چیمبر میں این اے 174اور175سے آئے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں سے ملاقاتوں کے دوران گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن ایک حقیقت جس کے کردار سے قطعی انکار ممکن نہیں لیکن اپوزیشن کو بھی اپنی پالیمانی ذمہ داریوں کا احساس کرنا چاہیے ۔ انہوں نے کہاکہ حکومت اپوزیشن کوساتھ لے کر چل رہی ہے اور کسی بھی ایشو پر سٹینڈ لینے سے پہلے ہمیشہ اپوزیشن کو اعتماد میں لیا ۔ انہوں نے مزید کہاکہ این اے 174اور پی پی 247و247کے عوام کے ساتھ ہی میرادل دھڑکتا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ڈپٹی سپیکر کی ذمہ داریاں مجھے اپنے حلقہ کے عوام سے دور نہیں رکھ سکتیں ملاقات کرنے والوں میںیوسی چیئر مین سردار جمیل الرحمن خان بزدار ٗ ملک بشیر احمد خان پرہار ٗ سردار محمد اشفاق خان پتافی ٗ فاروق خان گوپانگ اور مرزا فرحان خان مغل ودیگر بھی موجود تھے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...