پروفیسر مرزا منور کی زندگی پاکستان کے لئے وقف تھی،پروفیسر رفیق احمد

پروفیسر مرزا منور کی زندگی پاکستان کے لئے وقف تھی،پروفیسر رفیق احمد

  

لاہور(لیڈی رپورٹر)پروفیسر مرزا محمد منور کے فکروعمل کا محور اسلام ، پاکستان ، علامہ اقبالؒ اور قائداعظمؒ تھے۔ آپ نے اپنی زندگی پاکستان کی فکری و نظریاتی اساس کی ترویج واشاعت کیلئے وقف رکھی تھی۔ آپ اعلیٰ پائے کے شاعر، ادیب، محقق، مورخ اور خوش گفتار مقرر تھے۔ تحریک پاکستان کے اغراض و مقاصد اور ہندو ذہنیت کے بارے میں آپ کی تحقیقی کتب نہایت اہمیت کی حامل ہیں۔ان خیالات کا اظہار مقررین نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان ‘ لاہور میں ممتاز علمی و ادبی شخصیت اور ماہر اقبالیات پروفیسر مرزا محمد منور کی 19ویں برسی کے موقع پرمنعقدہ خصوصی نشست کے دوران کیا۔ نشست کا اہتمام نظریۂ پاکستان ٹرسٹ نے تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے اشتراک سے کیا تھا۔ اس نشست کی صدارت تحریک پاکستان کے سرگرم کارکن اور وائس چیئرمین نظریۂ پاکستان ٹرسٹ پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کی جبکہ اس موقع پر ممتاز کالم نگار اثر چوہان، معروف صحافی جمیل اطہر، پروفیسر محمد یوسف عرفان، مرحوم کے داماد صلاح الدین ایوبی، متین صلاح الدین، ڈاکٹر عنبرین صلاح الدین، انعام الرحمن گیلانی، نواب برکات محمود اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد موجود تھے۔ نشست کی نظامت کے فرائض سیکرٹری نظریۂ پاکستان ٹرسٹ شاہد رشید نے انجام دیے۔پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا کہ مرزا محمد منور سچے پاکستانی تھے ، آپ نے قائداعظمؒ ، علامہ اقبالؒ ، تحریک پاکستان، ہندو ذہنیت و دیگر موضوعات پر معلوماتی اور وقیع کتب رقم کیں۔ نئی نسل کو ان کی حیات وخدمات سے آگاہ کرنے کیلئے انکی زندگی کے بارے میں ایک مفصل کتاب مرتب کرنے کی ضرورت ہے۔ جمیل اطہر نے کہا کہ پروفیسر مرزا محمد منور ان اساتذہ میں شامل ہیں جن سے میں نے اکتساب فیض کیا۔ میری ان سے پہلی ملاقات 1958ء میں اس وقت ہوئی جب وہ گورنمنٹ کالج فیصل آباد میں شعبہ اردو کے سربراہ تھے اور میں نے اس سال کالج میں داخلہ لیا

پروفیسر رفیق

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -