نیو اسلام آباد ایئر پورٹ تعمیر میں بے ضابطگیاں ،بلیک لسٹ کردہ کمپنی کے افسران سول انجینئرز بھی نہ تھے سیکرٹری ایوی ایشن کا انکشاف

نیو اسلام آباد ایئر پورٹ تعمیر میں بے ضابطگیاں ،بلیک لسٹ کردہ کمپنی کے ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر، نیوز ایجنسیاں) پبلک اکاؤنٹس کمیٹی (پی اے سی )نے نیو اسلام آباد ائیرپورٹ کی تعمیر میں قومی خزانے کو اربوں ر و پے نقصان پہنچانے والے سول ایوی ایشن اتھارٹی کے افسران کیخلاف ایف آئی آر کا اندراج نہ ہونے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے انکو ا ئری کمیٹی کی سفارشات پر عملدرآمد کیلئے سب کمیٹی قائم کردی ، کمیٹی نے ائیرپورٹ(بقیہ نمبر51صفحہ12پر )

کی تعمیر کیلئے بنائے جانیوالے جائنٹ وینچرمیں تبدیلی کے بارے میں بھی ایم ڈی پیپرا کی بریفنگ پر عدم اعتماد کا اظہارکیا ۔اس موقع پر کمیٹی کے رکن سینیٹر شبلی فراز نے سابق حکومت کے دور میں سفار شا ت پر عمل درآمد نہ ہونے کا معاملہ اٹھاتے ہوئے چیئرمین کمیٹی سے استفسار کیا اگر سابقہ دور میں وزیر اعظم کے احکامات پر عمل درآمد نہیں کیا گیا تو اب سب کمیٹی کی سفارشات سے کیا فرق پڑے گا ،جس پر چیئرمین کمیٹی نے جواب دیا کمیٹی کی سفارشات سامنے آنے دیں پھر د یکھتے ہیں آپکی حکومت اس کیخلاف کیا اقداما ت کرتی ہے ، سیکرٹری ایو ی ایشن نے انکشاف کیانیو اسلام آباد ائیرپورٹ کی کنسلٹنٹ فرم لوئس برجر گر و پ جس کو بلیک لسٹ کیا گیا، سکیوررٹی بھی ضبط کی نے جن افسران کی لسٹ فراہم کی اس میں بعض سول انجینئر ز بھی نہیں تھے ۔پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کا اجلاس چیئرمین شہباز شریف کی سربراہی میں پار لیمنٹ ہا ؤس میں منعقد ہوا،جس میں کمیٹی اراکین کے علاوہ ڈی جی ایف آئی اے بشیر میمن،سیکرٹری سول ایوی ایشن ،ایم ڈی پیپرا سمیت آڈ ٹ حکام نے شرکت کی ،اس موقع پر کمیٹی کو نیو اسلام آباد ائیر پورٹ کی تعمیر کیلئے بنائے جانیوالے جائنٹ وینچر سے متعلق بریفنگ دیتے ہو ئے ایف آئی اے حکام نے بتایانیو اسلام آباد ائیر پورٹ کا معاہدہ بین القوامی طور پر تسلیم کئے جانیوالے فیڈک قو ا نین کے تحت دیا گیا ہے، اس حوالے سے پیپرا کی ویب سائٹ پر تمام تفصیلات موجود ہیں اور انہیں قوانین کے تحت تمام معاہدے کئے جا تے ہیں جس پر چیئرمین کمیٹی نے کہا ایک معاہدہ ہونے کے بعد پیپرا قوانین کے تحت کسی دوسری کمپنی کو شامل نہیں کیا جاسکتا ، اس موقع پر کمیٹی کے اراکین نے ایم ڈی پیپرا سے استفسار کیا جو قوانین پیپرا کی ویب سائٹ پر موجود ہیں اگر اس کے مطابق کوئی ٹھیکہ دیا جاتا ہے تو اس میں کیا غلطی ہے جس پر ایم ڈی پیپرا نے کہامعاہدے کی نوعیت کو دیکھنے کی ضرورت ہے ،جس پر چیئرمین کمیٹی نے ایم ڈی پیپرا کی بریفنگ پر عدم اعتماد کا اظہار کرتے ہوئے کہا ایم ڈی کو اپنے ہی ادارے کے قوانین کا کوئی علم نہیں، اس موقع پر پیپرا کے ایک عہدیدار نے کہاپیپرا میں سیاسی تقرریوں کی وجہ سے معاملات خراب ہوتے ہیں ،کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے ایف آئی اے حکام نے بتایا نیو اسلام اباد ائیرپورٹ میں کرپشن اور بے ضابطگیوں سے متعلق بنائی جانیوالی انکوائری رپورٹ کے مطابق سول ایوی ایشن کے افسران کیخلاف ایف آئی آرز کے اندراج کی سفارش کی گئی تھی جس پر سیکرٹری ایو ی ایشن نے کمیٹی کو بتایا ادارے کے افسران کو سزائیں دی گئی ہیں اور ان کے گریڈ میں کمی کی گئی ہے جبکہ 6افسران اور 7کنسلٹنٹس کیخلاف سفارشات پر عمل درآمد کیا گیا ہے،نیو اسلام آباد ائیرپورٹ کی کنسلٹنٹ فرم لوئس برجر گر و پ کو بلیک لسٹ کرنے کیساتھ ساتھ اس کی سکیوررٹی بھی ضبط کی ہے جس پر متعلقہ کمپنی نے عدالت سے رجوع کیا ہے، انہوں نے انکشاف کیا کمپنی کی جانب سے جن افسران کی لسٹ فراہم کی گئی اس میں بعض سول انجینئر ز بھی نہیں تھے، چیئرمین کمیٹی سمیت اراکین نے قومی خزانے کو اربوں روپے نقصان پہنچانے والے افسران کیخلاف ایف آئی آر زدرج کرنے کی بجائے انہیں سزا کے طور پر گریڈ میں کمی کرنے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے معاملہ سب کمیٹی کے سپرد کردیا ،کمیٹی نے پی آئی اے کی ری سٹرکچرنگ کے حوالے سے دی جانیوالی بریفنگ اگلے اجلاس تک موخر کردی ۔

پی اے سی انکشاف

مزید :

صفحہ آخر -