مرتضیٰ امجد کو اشتہاری قرار دینے ، وارنٹ گرفتاری کے اجراء کا حکم معطل

مرتضیٰ امجد کو اشتہاری قرار دینے ، وارنٹ گرفتاری کے اجراء کا حکم معطل

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ نے سابق چیف جسٹس پاکستان افتخار محمدچودھری کے داماد مرتضیٰ امجدکوایڈن ہاؤسنگ کیس میں احتساب عدالت کی طرف سے اشتہاری قرار دینے اوران کے وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کا حکم معطل کر تے ہوئے تفتیشی افسر کو 19 فروری کو ریکارڈ سمیت طلب کرلیاہے۔جسٹس ملک شہزاد احمد خان کی سربراہی میں دورکنی بنچ نے یہ عبوری حکم مرتضیٰ امجد کی اہلیہ افراء مرتضیٰ کی درخواست پر جاری کیا۔درخواست گزار کے وکلاء نے موقف اختیار کیا کہ نیب نے ایڈن ہاؤسنگ کے معاملے میں مرتضیٰ امجد کے وارنٹ گرفتاری جاری کئے گئے جبکہ مرتضیٰ امجد کا ایڈن ہاؤسنگ کے ساتھ کوئی تعلق نہیں، اس کے باوجود نیب کی درخواست پر انٹرپول نے ریڈ وارنٹ جاری کرکے اسے دبئی سے گرفتار کیا،وکلاء نے بتایاکہ بیگناہ ثابت ہونے پر مرتضیٰ امجددبئی سے رہا ہوگئے۔ احتساب عدالت کی جانب سے اشتہاری قرار دیا جانا اورانٹرپول کے ذریعے گرفتاری غیر قانونی ہے، نیب پراسیکیوٹر نے کہا کہ درخواست گزار متاثرہ فریق نہیں ہے،عدالت کو بتایا گیا کہ احتساب عدالت نے 12 ستمبر 2018ء کو مرتضیٰ امجد کو اشتہاری قرار دیا، درخواست میں مرتضیٰ امجد کا نام ای سی ایل سے نام نکالنے کی استدعا بھی کی گئی ہے،اس کیس کی مزید سماعت19فروری کو ہوگی۔

مزید :

علاقائی -