سیاستدانوں کی تنخواہوں میں اضافہ کا بل بے حسی کی مثال قرار

    سیاستدانوں کی تنخواہوں میں اضافہ کا بل بے حسی کی مثال قرار

  



اسلام آباد (آئی این پی) پاکستان اکانومی واچ کے چئیرمین برگیڈئیر محمد اسلم خان نے کہا ہے کہ سینیٹ اور قومی اسمبلی کے ممبران کی تنخواہوں الاؤنسوں اور مراعات میں اضافہ کا بل بعض سیاستدانوں کی بے حسی اور عوامی مسائل سے لاتعلقی کا ثبوت تھا۔ ایک طرف معاشی استحکام کے لئے عوام سے مسلسل قربانیاں مانگی جا رہی ہیں جس نے انکی زندگی مشکل بنا ڈالی ہے جبکہ دوسری طرف بعض سیاسی شخصیات کو اپنی تنخواہوں اور مراعات میں کئی سو فیصد اضافے کی پڑی ہوئی تھی۔ محمد اسلم خان نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ گزشتہ پندرہ ماہ میں پندرہ لاکھ سے زیادہ افراد بے روزگار ہو چکے ہیں، صنعتیں اور کاروبار بند ہو رہے ہیں جبکہ مہنگائی آسمان سے باتیں کر رہی ہے مگر عوام سے ووٹ لینے والوں کی اکثریت اس بارے میں سوچنے کی زحمت گوارا کرنے کے بجائے مزید آسائشوں کی فکر میں لگے ہوئے ہیں جو افسوسناک ہے۔ان حالات میں سپیکر نیشنل اسمبلی اور سینٹ کے چئیرمین کی تنخواہوں میں چار سو فیصد اضافہ کی کوشش قابل مزمت تھی۔انھوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف ن لیگ اور پیپلز پارٹی نے اس بل کو ناکام بنا کر درست قدم اٹھایا۔سیاستدانوں کو چائیے کہ مہنگائی کم ہونے اور عوام کی تنخواہوں میں اضافہ تک صبر سے کام لیں۔

بے حسی

مزید : پشاورصفحہ آخر