آئین اور قانون آل شریف کے گھر کی باندی نہیں: فیاض چوہان

  آئین اور قانون آل شریف کے گھر کی باندی نہیں: فیاض چوہان

  



لاہور(این این آئی)صوبائی وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ پاکستان کا آئین اور قانون آلِ شریف کے گھر کی باندی نہیں جو ان کی شاہی خواہشات کا احترام کر ے، دنیا کا ہر مریض سب سے پہلے اپنے علاج اور تیمارداری کی فکر کرتا ہے، نوز شریف واحد مریض ہیں جو علاج نہ کروانے کی ہڑتال پر ہیں،نواز شریف آج جس حال میں ہیں اس کی وجہ ان کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کے ٹویٹس اور ٹیکے ہیں، ڈاکٹر عدنان خود مریض معلوم ہوتے ہیں وہ ان کا کیا علاج کریں گے۔ ان خیالات کا اظہار صوبائی وزیر اطلاعا ت فیاض الحسن چوہان نے ڈی جی پی آر آفس میں پریس کانفرنس کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ کیا پاکستان کی جیلوں میں قید ان لاکھوں خواتین و حضرات کو بھی رہائی دیدی جا ئے جن کے رشتے دار جیلوں سے باہر بیمار ہیں؟۔ انہوں نے احسن اقبال کے بیانات کے جواب میں کہا کہ کاہنہ کاچھا کے سقراط اور نارووال کے ارسطو آل شریف کے منشی کا کردا ر ادا کرتے ہوئے قوم کو گمراہ نہ کریں۔ سب جانتے ہیں بیگم کلثوم نواز اور نواز شریف کو حکومت اور عدالتوں نے پہلے بھی علاج کیلئے ریلیف دیا لیکن،بیگم صفدر اعوان نے سارے پاکستا ن میں جلسہ جلسہ کھیلنا اور سادہ عوام کو گمراہ کرنا شروع کر دیا لیکن والدہ کی تیمارداری نہ کی۔ اب جبکہ نواز شریف کا سارا ٹبر ان کے پاس لندن میں موجود ہے، اور وہ بیٹے جو نواز شریف کے جیلوں اور ہسپتالوں کے چکر لگاتے وقت ان کے ساتھ نہیں تھے، ان کے پاس موقع ہے کہ وہ اپنے اس باپ کی خدمت کر کے ثواب کمائیں جس نے انہیں چودہ سال کی عمر میں ارب پتی بنا دیا۔ اس موقع پر وزیر اطلاعات نے پشتون تحفظ موومنٹ کے سرکردہ لیڈران منظور پشتین، محسن داوڑ اور علی وزیر کی جانب سے حکومت، افواجِ پاکستان اور دیگر سکیورٹی اداروں کو تنقید کا نشانہ بنائے جانے کے حوالے سے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان میں اگر اسوقت امن و سکون ہے، بازاروں میں کاروبار کی ریل پیل، تمام مذاہب اور مکاتبِ فکر کی عبادتگاہوں کا تقدس برقرار ہے، دنیا پاکستان میں سیاحت اور کاروبار کے مواقع دیکھ رہی ہے، بین الاقوامی ٹیمیں کھیلنے کے لیے آ رہی ہیں تو اس کے پیچھے وردی ہے۔ پاکستان کی افواج، پولیس اور دیگر سکیورٹی اداروں نے بیس سال خطِ اول پر اپنا تن من دھن اور جان و مال کی قربانیاں دیکر ہمیں یہ آزادی دی ہے کہ ہم اپنے گھرو ں میں سکون کی نیند سو سکیں اور ہمارے بچے محفوظ ماحول میں پلیں بڑھیں۔ آج ہر شعبے اور مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والا پاکستانی افواجِ پاکستان کیساتھ الفت، محبت اور فرحت کا رشتہ رکھنا باعثِ فخر سمجھتا ہے۔ ہم نے بڑی محنت سے سیاسی اور میڈیا کے محاذ پر بھارت کی جانب سے مسلط کی گئی ففتھ جنریشن وار کو ختم کیا ہے۔ پہلے را اور این ڈی ایس منگل باغ جیسے لوگوں کو استعمال کرتی تھی، اب انہوں نے تحریکِ طالبان پاکستان دوم کا کردار ادا کرنیوالی پی ٹی ایم اور پڑھے لکھے لوگوں کو اپنے مذموم مقاصد کیلئے استعمال کرنا شروع کر دیا ہے۔ بھارتی فوجی اسٹیبلشمنٹ اور را 27 فروری کی فلم "طیارے زمین پر" کے ٹریلر کے بعد جان چکی ہے کہ وہ فرنٹ فٹ پر پاکستان کا مقابلہ نہیں کر سکتے۔ اسلئے مودی سرکار اب را اور این ڈی ایس کے ذریعے لاکھوں ڈالرز لگا کر ایسے لوگوں کی حمایت کر رہے ہیں جو مظلوم اور نہتے پشتونوں پر ڈرون حملوں کی حمایت کرتے رہے ہیں اور پاکستان کیخلاف بھونکتے ہیں۔پی ٹی ایم کو جنرل قمر جاوید باجوہ کی شروع کی ہوئی 2640 کلومیٹر لمبی وہ باڑ کھٹکتی ہے جس کے نہ ہونے سے بلوچوں، پشتونوں اور خیبرپختونخواکے عوام کی زندگی اجیرن ہو چکی تھی۔ افواج پاکستان نے دہشتگردی کیخلاف جنگ میں بہت کامیابیاں سمیٹی ہیں۔ پاکستان کے حوصلہ مند اور غیرت مند پشتون را کے ان ایجنٹوں کو نشان عبرت بنا دیں گے۔ انہوں نے چیف جسٹس پاکستان سے بھی اپیل کی کہ پی ٹی ایم کے لیڈران کیخلاف سوموٹو ایکشن لیتے ہوئے آئین کے آرٹیکل 6 کے تحت مقدمہ چلایا جائے۔

فیاض چوہان

مزید : صفحہ اول