بچی سے بداخلاقی، قوم کا کاخیل، عمائدین کا درندوں کو سرعام پھانسی کا مطالبہ

بچی سے بداخلاقی، قوم کا کاخیل، عمائدین کا درندوں کو سرعام پھانسی کا مطالبہ

  



نوشہرہ (بیورورپورٹ) نوشہرہ میں 8سالہ بچی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے جنسی درندوں کونوشہرہ کی چوک میں سرعام پھانسی پر لٹکانے کیلئے قوم کاکاخیل اور نوشہرہ کے عمائدین نے ایکا کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا کہ بچوں کو جنسی درندگی کا نشانہ بنانے والوں کو کیفر کردار تک پہنچانے کیلئے خصوصی ماڈل کورٹس کا قیام عمل لایا جائے حکومت فوری پر قانون سازی کرے اس سلسلے میں قوم کاکاخیل کے سرپرست اعلیٰ اور پاکستان پیپلز پارٹی کے ضلعی صدر بیرسٹر میاں فیروز جمال شاہ کاکاخیل کی خصوصی کال اور ہدایت پر قوم کاکاخیل اور نوشہرہ کے سیاسی عمائدین نے احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرین کی قیادت قوم کاکاخیل کے سرپرست اعلیٰ بیرسٹر میاں فیروز جمال شاہ کاکاخیل کر رہے تھے مظاہرے میں عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی رہنما میاں یحییٰ شاہ کاکاخیل، جمعیت علما ء اسلام س کے سربراہ مولانا حامد الحق، پیر ذوالفقار باچہ، میاں ظہور کاکاخیل،جمعیت طلبہ اسلام کے ضلعی صدر عاصم علیزئی اور خالد خان نے بھی خطاب کیا مظاہرین نے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جس پر بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی اور زیادتی کے بعد قتل کرنے والے درندوں کو سرعام پھانسی پر لٹکانے کے مطالبات درج تھے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے بیرسٹر میاں فیروز جمال شاہ کاکاخیل نے کہا کہ موجودہ حکومت میں فحاشی بڑھ گئی ہے اور نااہل حکمرانوں کو کسی قسم کی کوئی پراوہ ہی نہیں ہے انہوں نے کہا کہ حکومت بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے خلاف قومی اسمبلی سے بل کی منظورکریں کیونکہ آج عوام کے بچے اور بچیوں کی عزتیں محفوظ نہیں اور وہ اس لئے کہ ان جنسی درندوں کو سزا دینے کیلئے کوئی موثر قانون ساز ی نہیں کی گئی ہے انہوں نے مزید کہا کہ ہم حکومت وقت سے مطالبہ کرتے ہیں وہ زیارت کاکاصاحب میں جنسی درندگی کانشانہ بنے کے بعد قتل ہونے والی 8سالہ بچی کے قاتلوں کا کیس خصوصی ماڈل کورٹ کو منتقل کرکیاان کو نوشہرہ شوبرا چوک میں سرعام پھانسی پر لٹکایا جائے بصورت دیگر ہم اسلام کی طرف لانگ مارچ اور پارلیمنٹ کے سامنے دھرنا دینے پر مجبور ہوجائیں گے۔

مزید : صفحہ اول