اشتہاری مجرمان، قبضہ مافیا اور منشیات فروشوں کے خلاف انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز میں مزید تیزی لائی جائے: آئی جی پنجاب

اشتہاری مجرمان، قبضہ مافیا اور منشیات فروشوں کے خلاف انٹیلی جنس بیسڈ ...
اشتہاری مجرمان، قبضہ مافیا اور منشیات فروشوں کے خلاف انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز میں مزید تیزی لائی جائے: آئی جی پنجاب

  



لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب شعیب دستگیر نے کہاہے کہ عوام کی جان ومال کے تحفظ اور معاشرے میں قانون کی بالادستی برقرار رکھنے کیلئے تھانوں کی ورکنگ کو بہتر سے بہتر بنانا نہایت ضروری ہے،لہذا تمام افسران کلوز مانیٹرنگ، موثر سپرویژن اور انسپکشن سے تھانوں کی ورکنگ کا بغور جائزہ لیں اور قانون کے یکساں نفاذ کے ذریعے عوامی مسائل اور شکایات کے بروقت ازالے کو ترجیحی بنیادوں پر یقینی بنایا جائے،تھانوں میں آنے والے شہریوں کے مسائل کے حل میں تاخیری حربے اور غفلت کا مظاہرہ کرنے والے افسر واہلکار کسی رعائیت کے مستحق نہیں لہذا ایسے افسران کے خلاف ڈسپلن میٹرکس کے مطابق سخت سے سخت سزا میں ہرگز تاخیر نہ کی جائے۔

انہوں نے تاکید کی کہ دھاتی ڈور اور پتنگوں کی تیاری، اسکے استعمال اور خریدوفروخت میں ملوث عناصر کے خلاف فوری قانونی کاروائی میں ہرگز تاخیر نہ کی جائے جبکہ ہوائی فائرنگ اور پتنگ بازی پر پابندی کے قانون پر عمل درآمد کو سختی سے یقینی بنایا جائے اور جو بھی شہری قانون کے خلاف ورزی کرے اس کے خلاف فوری قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے۔ انہوں نے مزیدکہاکہ اشتہاری مجرمان، منشیات فروشوں اور عوام کی املاک پر قبضہ کرنے والے قبضہ مافیا کے خلاف انٹیلی جنس بیسڈ آپریشنز میں مزید تیزی لائی جائے اور سینئر افسران ان آپریشنز کی خود نگرانی کرتے ہوئے ہفتہ وار پراگریس رپورٹس بھی باقاعدگی سے سنٹرل پولیس آفس بھجوائیں۔ انہوں نے مزیدکہاکہ پولیس شہدائے اور ملازمین کی فلاح کیلئے بنائی گئی ”ویلفیئر آئی“پراجیکٹ کا دائرہ کار صوبے کے باقی اضلاع میں پھیلایا جائے تاکہ دوران سروس شہادت کا اعزاز پانے یا انتقال کرجانے والے ملازمین کے اہل خانہ کے مسائل کا فی الفور ازالہ ممکن ہوسکے۔

انہوں نے مزیدکہاکہ فرنٹ ڈیسک، آپریشنز، انویسٹی گیشن اور پٹرولنگ سمیت تمام شعبوں کی کارکردگی میں مزید بہتری کیلئے ماڈرن پولیسنگ کی طرز پر جدید ٹیکنالوجی اور تکنیکی مہارتوں کا استعمال وقت کی اہم ضرورت ہے لہذا تمام افسران جدید پیشہ ورانہ تربیت اور موثربریفنگ اور بروقت مانیٹرنگ کے ذریعے ماتحت افسران کی کار کردگی کو بہتر سے بہتر بنائیں تاکہ جرائم پیشہ عناصر کے قلع قمع کا عمل مزید تیز ہوسکے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے آج کیپیٹل سٹی پولیس آفس لاہور کے دورے کے دوران افسران کو ہدایات دیتے کیا،کیپیٹل سٹی پولیس آفس آمد پر سی سی پی او لاہور ذوالفقار حمید، ڈی آئی جی آپریشنز رائے بابر سعید اور ڈی آئی جی انویسٹی گیشن ڈاکٹر انعام وحید نے آئی جی پنجاب کا استقبال کیا اور انہیں لاہور پولیس کی کرائم فائٹنگ سٹریٹیجی اور جدید پراجیکٹس کے متعلق بریفنگ دی۔ آئی جی پنجاب نے مانیٹرنگ روم اور اوپس روم میں مختلف پراجیکٹس کی ورکنگ کا بغور جائزہ لیا اور کارکردگی میں مزید بہتری کیلئے ہدایات بھی جاری کیں۔ سی سی پی او لاہور نے آئی جی پنجاب کو ویلفیئر آئی پراجیکٹ کے ذریعے شہدائے پولیس اورملازمین کے مسائل کے حل ہونے والے اقدامات سے آگاہ کیا۔ انہوں نے پولیس اسٹیشن ریکارڈ مینجمنٹ، ہوٹل آئی، ٹریول آئی اور سی آر ایم ایس سمیت دیگر پراجیکٹس کی کارکردگی کے متعلق آئی جی پنجاب کو تفصیلی آگاہ کیا جس کے بعد آئی جی پنجاب نے کمیٹی روم میں اعلی سطحی اجلاس کی صدارت کی اور لاہور پولیس کی جانب سے عوام کی جان ومال کے تحفظ کیلئے ہونے والے اقدامات اور مجموعی پرفارمنس کا جائزہ لیا۔ اجلاس میں آئی جی پنجاب نے افسران کو ہدایات دیتے ہوئے کہاکہ لاہور پولیس پنجاب پولیس کا چہرہ ہے لہذا افسران شہریوں کے مسائل کے بلاتاخیرحل کیلئے اوپن ڈور پالیسی کو اپنا شعار بنائیں اور قانون کی یکساں عمل داری، میرٹ کی پاسداری اور بھرپور انسدادی کاروائیوں کے ذریعے معاشرے میں احساس تحفظ کی فضا کو فروغ دیں۔ انہوں نے تاکیدکی کہ دور حاضر کے تقاضوں کے مطابق تفتیش کے معیار کو بہتر سے بہتر کرنے کیلئے جدید انویسٹی گیشن ماڈیولز، جیو فینسنگ اور فارنزک سائنس سے بھرپور استفادہ کیا جائے تاکہ زیر التواء کیسز کی تعداد کم ہونے سے پولیس کی پرفارمنس بہتر سے بہتر ہوسکے جبکہ دوران حراست تشدد یا ہلاکت کے واقعات پر ذمہ داران کے خلاف زیرو ٹالریننس کے تحت کاروائی میں ہرگز تاخیر نہ کی جائے۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور