کلین سویپ کا عفریت شاہینوں کی پرواز کو نگل گیا

کلین سویپ کا عفریت شاہینوں کی پرواز کو نگل گیا

سڈنی(سپورٹس ڈیسک) آسٹریلیا نے پاکستان کو تیسرے اور آخری ٹیسٹ میچ میں 220 رنز سے شکست دے کر سیریز میں 3-0سے وائٹ واش کردیا، آخری ٹیسٹ میچ میں آسٹریلیا نے پاکستان کو جیت کے لیے 465 رنز کا ہدف دیا تھا، تاہم پاکستان کی پوری ٹیم 244رنز بنا کر ڈھیر ہوگئی، سرفرازاحمد 72رنز بناکر نمایاں بیٹسمین رہے،پاکستانی ٹیم کو آسٹریلین سرزمین پر پاکستان کو لگاتار چوتھی بار وائٹ واش اور 12ویں مسلسل شکست کا سامنا کرنا پڑا، ڈیوڈ وارنردونوں اننگز میں جارحانہ بیٹنگ پر میچ کا بہترین کھلاڑی قرارپائے آسٹریلین کپتان نے بہترین کھلاڑی کا ایوارڈبھی اپنے نام کیا ۔۔میچ کے پانچویں روز پاکستان نے اپنی نامکمل اننگز دوبارہ شروع کی تو پہلے ہی اوور میں اظہر علی کو آؤٹ کر کے آسٹریلیا نے جیت کی بنیاد رکھی۔بابر اعظم توقعات کے باوجود ایک بار پھر ناکام ہوئے اور 9رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوئے۔پاکستان کو سب سے بڑا دھچکا اس وقت لگا جب یونس خان 13 رنز بنانے کے بعد ناتھن لایون کو وکٹ دے بیٹھے۔یاسر شاہ نے 93 گیندیں کھیل کر نائٹ واچ مین کردار بخوبی ادا کیا اور جب وہ پویلین لوٹے تو 96 رنز پر آدھی پاکستانی ٹیم آؤٹ ہو چکی تھی۔اسد شفیق نے کپتان مصباح الحق کے ساتھ مل کر 136رنز بنائے لیکن مچل اسٹارک نے وکٹیں بکھیر کر ان کی پیش قدمی روک دی۔سرفراز احمد اور مصباح الحق نے ساتویں وکٹ کیلئے 52 رنز جوڑے لیکن پہلی اننگز میں غیر ضروری شاٹ کھیلنے والے پاکستان کے کپتان نے اپنی غلطی دہراتے ہوئے اسٹیو اس کیف کو وکٹ تحفے میں پیش کی۔سرفراز احمد آسٹریلین بلے بازوں کے خلاف ڈٹ گئے لیکن دوسرے اینڈ سے کوئی بھی کھلاڑی ان کا ساتھ نبھانے پر تیار نہ ہوا اور پوری ٹیم 244 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی، سرفراز نے 75 رنز بنائے اور ناٹ آؤٹ رہے۔آسٹریلیا نے میچ میں 220رنز سے کامیابی حاصل کرنے کے ساتھ ساتھ سیریز میں 3-0 سے وائٹ واش بھی مکمل کر لیا۔واضح رہے کہ صرف دو ماہ میں یہ تیسرا ٹیسٹ ہے جس میں پاکستانی ٹیم آخری دن اپنے بیٹسمینوں کی مایوس کن کارکردگی کی وجہ سے میچ بچانے میں کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔نیوزی لینڈ کے خلاف ہملٹن ٹیسٹ کے آخری دن پاکستان نے چائے کے وقفے پر صرف ایک وکٹ کے نقصان پر158 رنز بنائے تھے لیکن آخری سیشن میں نو وکٹیں صرف 72 رنز پر گرگئیں۔ملبورن ٹیسٹ میں پاکستان نے آخری دن چائے کے وقفے پر پانچ وکٹوں پر 91 رنز بنائے تھے لیکن آخری سیشن میں پانچ وکٹیں صرف 72 رنز پر ڈھیر ہوگئی تھیں۔اس قبل آسٹریلیا نے ٹیسٹ میچ کے چوتھے دن اپنی دوسری اننگز 241 رنز دو کھلاڑی آٹ پر ڈکلیئر کر کے پاکستان کو میچ جیتنے کے لیے 465 رنز کا ہدف دیا تھا۔اپنا پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے شرجیل خان نے اپنے مخصوص جارحانہ انداز میں بیٹنگ کی لیکن وہ چھ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 40 رنز بناکر نیتھن لائن کی گیند پر وارنر کے ہاتھوں کیچ ہو گئے۔پاکستان کی یہ پہلی وکٹ 51 رنز پر گری جو اس سیریز میں اس کی سب سے اچھی اوپننگ شراکت تھی۔کھیل کے اختتام پر اظہرعلی 11 اور نائٹ واچ مین یاسر شاہ تین رنز پرناٹ آٹ تھے۔یہ آسٹریلین سرزمین پر پاکستان کو لگاتار چوتھا وائٹ واش اور 12ویں مسلسل شکست ہے۔آسٹریلین اوپنر ڈیوڈ وارنر کودونوں اننگز میں جارحانہ بیٹنگ پر میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا جبکہ آسٹریلین کپتان پوری سیریز میں اپنی ٹیم کی بہترین قیادت اور ذمے دارانہ بیٹنگ پر بہترین کھلاڑی کے ایوارڈ کے مستحق قرار پائے۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی


loading...