ضلعی حکومتوں کا نظام بحال ہونے کے باوجود ، تجاوزات کی بھر مار ،عملہ دیہاڑی باز بن گیا

ضلعی حکومتوں کا نظام بحال ہونے کے باوجود ، تجاوزات کی بھر مار ،عملہ دیہاڑی ...

 لاہور(جاوید اقبال)ضلعی حکومتوں کا نظام بحال ہونے کے باوجود شہر لاہور ایک مرتبہ پھر تجاوزات کی نرسریوں میں تبدیل ہو گیا ہے ۔صوبائی دارالحکومت کے بازار، مارکیٹیں،پلازے،چوک،سروس روڈ،فٹ پاتھ قبضہ اور تجاوزات مافیا کے نرغے میں آگئے ہیں۔ٹاؤن میں موجود افسران و عملہ تجاوزات ختم کرنے کی بجائے دیہاڑیاں لگانے میں مصروف ہیں۔اس حوالے سے ٹاؤنوں کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ شہر میں تجاوزات میں اضافے کی واحد وجہ نئے نظام کا مکمل طور پر فعال نہ ہونا ہے 28دسمبر کے بعد سے تجاوزات کے خلاف آپریشن کیلئے سنٹرل ریگولیشن آفیسر تو لگا دیا گیا ہے مگر انفورسمنٹ اور ریگولیش کے رولز تاحال نہیں بنائے گئے اور نہ ہی ڈپٹی مئیر ز کے دفاتر کو فعال بنایا گیا ہے۔سنٹرل ریگولیشن آفیسر سٹی علی عباس بخاری کو لگایا گیا ہے مگر انہیں ریگولیشن اور انفورسمنٹ انسپکٹرز تک نہیں دیئے گئے اس لئے وسائل اور عملہ نہ ہونے کی وجہ سے تاحال تجاوزات کے خلاف آپریشن شروع نہیں ہو سکا۔جس کے نتیجے میں شہر تجاوزات کی نرسریوں میں تبدیل ہو گیا ہے۔بازاروں کے اندر بازار قائم ہو گئے ہیں۔رپورٹ کے مطابق مارکیٹوں میں بھی تجاوزات کے انبار لگ گئے ہیں۔شہر کے تمام داخلی اور خارجی راستوں سمیت اچھرہ بازار،داتا دربار،لاری اڈہ ، شا ہد ر ہ،شمالی لاہور کی مارکیٹوں ،مغلپورہ چوک، والٹن روڈ، قینچی،چونگی امرسدھو،گڑھی شاہو بازار،علامہ اقبال روڈسمیت پورے شہر میں تجاوزات کی بھر مار ہے ۔جس وجہ سے ٹریفک کا نظام بھی درہم برہم ہو گیا ہے۔اس حوالے سے مئیر لاہور کرنل (ر)مبشر جاوید کا کہنا ہے کہ آئندہ چند دنوں میں نظام مکمل فعال ہو جائے گا ریگولیشن آفیسر تعینات کر دیا گیا ہے شہر کو ہر صورت تجاوزات سے پاک کیا جائے گا تجاوزات قائم کرنیو الوں کے ساتھ کسی قسم کی رعایت نہیں برتی جائے گی۔قانون کے مطابق کارروائی کرینگے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...