لاہور،تعلیمی اداروں میں منشیات کے استعمال اورخرید وفرخت میں اضافہ

لاہور،تعلیمی اداروں میں منشیات کے استعمال اورخرید وفرخت میں اضافہ

لاہور(وقائع نگار)لاہور کے تعلیمی اداروں میں بھی منشیات کے استعمال اورخرید وفرخت کے واقعات بڑھتے جارہے ہیں ،چند روز پہلے لاہورمیں تین افراد تعلیمی اداروں کے باہر منشیات فروخت کرتے ہوئے پکڑے گئے تھے جبکہ پچھلے ماہ نجی یونیورسٹی کا طالب علم نشے کی زیادتی سے جان گنوا بیٹھا تھا،انتظامیہ کے لئے لمحہ فکریہ۔پولیس کے مطابق 4جنوری کو لاہورکے مختلف تعلیمی اداروں میں منشیات فروخت کرنے کے الزام میں تین افراد کو دھر لیا گیا۔ملزمان عظیم، معید بٹ اورحسن سے منشیات بھی برآمد کرلی گئیں، وہ تعلیمی اداروں کے باہر طلبہ کو منشیات فروخت کرتے تھے۔گزشتہ ماہ 13 دسمبر کو لاہورکے پوش علاقے ڈیفنس کی نجی یونیورسٹی کا طالب علم ہاسٹل میں مردہ پایا گیاتھا، پولیس نے اس کے کمرے سے سگریٹ اوردیگر اشیاء اپنی تحویل میں لے لیں۔طالب علم کی پوسٹ مارٹم رپورٹ سامنے آئی تو انکشاف ہوا کہ اس کی موت نشے کی زیادتی کے باعث ہوئی ہے۔

مزید : علاقائی


loading...