ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ایران کے جوہری معاہدے کو فوری طور پر منسوخ کرنے سے بحران پیدا ہوسکتا ہے، سینیٹر بوب کورکر

ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے ایران کے جوہری معاہدے کو فوری طور پر منسوخ کرنے سے ...

واشنگٹن (اے پی پی) امریکی سینیٹ کی کمیٹی برائے امورِ خارجہ کے سربراہ نے کہا ہے کہ آنے والی ٹرمپ انتظامیہ کی جانب سے ایران کے جوہری معاہدے کو فوری طور پر منسوخ کرنے سے بحران پیدا ہوسکتا ہے۔وائس آف امریکا کے مطابق صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر بوب کورکر نے کہا ہے کہ ان کے خیال میں اسے بالکل ہی ادھیڑ کر رکھ دینا مناسب نہ ہوگا۔ برعکس اِس کے، ہمیں بنیادی طور پر اِس کے نفاذ پر زور دینا ہوگا۔اْنھوں نے کہا کہ اْنھیں توقع ہے کہ جولائی 2015ء میں اعلان کردہ اِس بین الاقوامی سمجھوتے پر سختی سے نفاذ ہوگا، جس پر ایران اپنی معیشت کے خلاف نقصان دہ پابندیوں سے بچنے کے عوض اپنے جوہری پروگرام میں کٹوتی لانے پر رضامند ہوا۔انہوں نے کہا کہ ان کے خیال میں سمجھداری پر مبنی انداز یہ ہوگا کہ آپ اس معاہدے پر عمل درآمد کو یقینی بنائیں اور آپ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کو اِس کا ذمہ دار ٹھہرائیں۔

انہوں نے کہا کہ سمجھوتا ٹوٹنے کی صورت میں اِس کا وہی ذمہ دار ہوگا جو اِسے توڑے گا ناکہ ایک صدر جو عہدے پر فائز ہونے کے پہلے ہی روز ایسا عمل کرے کہ سمجھوتا ٹوٹ جائے۔کورکر نے کہا کہ امریکا کے پاس ایک راستہ ہے کہ وہ سمجھوتے پر سختی سے نفاذ کو یقینی بنائے نا کہ ایسا عمل کیا جائے جس سے بحرانی کیفیت پیدا ہو۔

مزید : عالمی منظر


loading...