نیب قوانین میں ترامیم کے معاملے پر پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس 11جنوری کو ہوگا :ایاز صادق

نیب قوانین میں ترامیم کے معاملے پر پارلیمانی کمیٹی کا اجلاس 11جنوری کو ہوگا ...

لاہور(آئی این پی) سپیکر قومی اسمبلی سردار ایاز صادق نے کہا ہے کہ نیب قوانین میں ترامیم کے معاملے پر پا رلیمانی کمیٹی کا اجلاس11جنوری کو ہوگا‘موجودہ حکومت جون 2018میں آئینی مدت پوری کر یگی 2018/19کا بجٹ جانیوالی نے تیار کر نا ہے یا آنیوالی حکومت نے اس پر حکومت اور اپوزیشن کو قبل ازوقت حکمت عملی بنانا ہوگی ‘پانامہ کیس سپر یم کورٹ میں ہمیں اس پر کسی قسم کا تبصرہ کر نا چاہیے اور نہ ہی کسی کو اس پر اثر انداز ہونے کی کوشش کر نی چاہیے ‘پیپلزپارٹی نے پار لیمنٹ میں ہمیشہ ایشوز کی سیاست کی ہے وہ پار لیمنٹ سے باہر کیا باتیں کر رہے ہیں میری نظر میں انکی کوئی اہمیت نہیں ‘آئین کے مطابق 40دن قومی اسمبلی میں نہ آنیوالا ڈی سیٹ ہو جاتا ہے مگر میں نہیں چاہوں گا کبھی اس قانون پر عمل کیا جائے جو نہیں آتا وہ جانے اور اسکے علاقے کے ووٹرز جانے۔ ہفتے کے روز مقامی ہسپتال میں جے یوآئی (ف) کے سر براہ مولانا فضل الر حمن کی عیادت کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے سردار ایاز صادق نے کہا کہ 11جنوری کو پار لیمانی کمیٹی کے اجلاس میں قومی اسمبلی اور سینٹ کے حکومتی اور اپوزیشن اراکین شر یک ہوں گے او ر اس اجلاس میں نیب کے نمائندگان بھی موجود ہوں گے جن سے مشاورت کے ساتھ نیب قوانین میں ترامیم کے حوالے سے حکمت عملی بنائی جائیگی ۔ ایک سوال کے جواب میں سر دارایاز صادق نے کہا کہ ایشوز پر بات کر نا اپوزیشن جماعتوں کا آئینی اور جمہو ری حق ہے اور پار لیمنٹ کو میں سب کو بات کر نے کی اجازت ہوتی ہے اور ایڈ وئزری کمیٹی میں جو بھی فیصلہ ہو جاتا ہے اس پر مکمل عمل ہونا چاہیے ۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن لیڈر قومی اسمبلی سید خورشید شاہ سمیت پیپلزپارٹی کے تمام اراکین نے ایوان کے اندرکبھی جمہو ریت اور موجودہ سسٹم کو ڈی ریل کر نے کی بات نہیں بلکہ وہ ہمیشہ جمہو ریت کو سپورٹ کر تے ہیں اور انکی خواہش بھی یہی ہے کہ حکومت اپنی آئینی مدت پوری کر یں لیکن اگر وہ پار لیمنٹ سے باہر حکومت کے خاتمے کی باتیں کر رہے ہیں تو میری نظر میں انکی کوئی اہمیت نہیں ۔ انہوں نے کہا کہ (ن) لیگ کی حکومت رواں سال 2016/17کا بجٹ پیش کر یگی مگر اس مسئلہ اگلے بجٹ کی تیاری کا ہوگا جس کے لیے حکومت اور اپوزیشن دونوں کو قبل ازوقت اس حوالے سے کوئی فیصلہ کر نا ہوگا کیونکہ بجٹ کی تیاری جون سے پہلے ہو جاتی ہے ۔

مزید : علاقائی


loading...