شدید سردی سے چولستان میں ٹوبے خشک ‘ قحط سالی کا خطرہ ‘ نقل مکانی شروع

شدید سردی سے چولستان میں ٹوبے خشک ‘ قحط سالی کا خطرہ ‘ نقل مکانی شروع

ہیڈراجکاں (نمائندہ پاکستان )چولستان میں شدید سردی اور خشک سالی سے کاروبار زندگی مفلوج ہو کر رہ گیا ۔ٹوبے خشک ہوچکے ۔قحط سالی کے خطرے بڑھ جانے سے بیشتر چولستانی نقل مکانی کرگئے ۔ تفصیل کے مطابق چولستان میں بارشیں نہ ہونے کی وجہ سے خشک سردی نے خشک صحرا کے مکینوں کی زندگی انتہائی مشکل کر دی ہے ۔ بارشوں کے پانی سے بھرنے والے ٹوبوں کا ذخیرہ شدہ پانی ختم ہو چکا ہے ۔ قدرتی گھاس اورجھاڑیاں سوکھ جانے سے جانوروں کا چارہ ناپید ہو کر رہ گیا۔ جس سے غذائی (بقیہ نمبر43صفحہ12پر )

قلت پیدا ہو چکی ہے ۔ موسمی بارشیں نہ ہونے کی وجہ سے خشک سالی سے تنگ آ کر قحط سالی کے خطرے کے پیش نظر دور درازعلاقوں کے سینکڑوں مکین اپنے مال مویشیوں سمیت نقل مکانی کر کے کھلے آسمان تلے شدید سردی میں بے یارو مدد گار زندگی گزارنے لگے ہیں۔ ایک سروے میں مختلف علاقوں کے مکینوں نے بتایا کہ پنجاب حکومت کے چولستانیوں کو ریلیف فراہمی کے تمام دعوے غلط ثابت ہوئے ہیں۔ چولستانی علاقوں کو جانے واٹر سپلائیاں ناقص اور غیر معیاری مٹیریل کی وجہ سے جگہ جگہ سے پھٹ چکی ہیں۔ ان کا پانی آخیر تک نہیں پہنچ پاتا ۔وہ سی ڈی اے کی فائلوں کی نذر ہو کر رہ گئی ہیں۔ زمینی کڑوا اور زہریلا پانی پینے سے خشک سردی نے جانوروں کے ساتھ انسانوں کو بھی شدید متاثر کیا ہے جس سے بیماریاں پھیل رہی ہیں۔ حالات سے تنگ اور دل برداشتہ ہو کرروحیلے نقل مکانی پرمجبور ہو رہے ہیں۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...