ناکافی سہولیات، پرانے پرنٹر، غیر ذمہ دار سٹاف، لمبی قطاریں، نادرا کا ٹریڈ مارک، علی آرکیڈ میں آتشزدگی

ناکافی سہولیات، پرانے پرنٹر، غیر ذمہ دار سٹاف، لمبی قطاریں، نادرا کا ٹریڈ ...

ملتان (خصوصی رپورٹر)نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی(نادرا) میں سسٹم کی خرابی شہریوں کے لیے عذاب بن گئی،ناقص وائرنگ کے باعث کمہاراں والا سنٹر کے بعدنادرا علی آرکیڈ سنٹر میں گذشتہ روز آگ بھڑک اٹھی جس پر فوری طور پر قابو پا لیا گیاتاہم وائرنگ اور یو پی ایس جلنے کے باعث پورا سسٹم فیل ہوگیا،جس کے باعث نئے قومی شناختی کارڈز،ب فارم ،تجدید کوائف کی تبدیلی سمیت دیگر امور کے لیے آئے ہوئے سینکڑوں شہریوں کو (بقیہ نمبر19صفحہ12پر )

گھنٹوں لمبی قطار میں کھڑے ہونے کے بعد مایوس لوٹنا پڑا،اس حوالے سے بتایا گیا ہے کہ قومی اہمیت کا حامل ادارہ نادرا لوگوں کو ریلیف دینے کی بجائے انکی مشکلات میں اضافے کا سبب بن رہا ہے ناکافی سہولیات،پرانے پرنٹرز،ناروا سلوک کا حامل غیر ذمہ دار سٹاف نادرا کا ٹریڈ مارک بن چکا ہے قانونی رکاوٹوں کے باعث ہزاروں افراد قومی شناختی کارڈ سے محروم ہیں ذرائع کے مطابق عرصہ دراز سے نادرا حکام کی جانب سے بائیو میٹرک مشینوں اور پرنٹرز کو تبدیل نہیں کیاگیا جس کی وجہ سے متعدد شہریوں کو اپنی شہریت کے لئے تصدیق میں مشکلات کا سامنا ہے جبکہ آئے روز پرنٹرز کی خرابی بھی شہریوں کی مشکلات میں اضافے کی بڑی وجہ ہے تین ماہ قبل کمہارانوالہ سنٹر میں ناقص وائرنگ کے باعث لگنے والی آگ کے باعث لاکھوں روپے کے نقصان کے علاوہ نادرا کا ڈیٹا بھی ضائع ہوا اس سنٹر کو تین روز بندش کے بعد دوبارہ آپریشنل کیا گیا جبکہ گزشتہ روز نادرا علی آرکیڈ سنٹر میں بھی ناقص وائرنگ کے باعث لگنے والی آگ کے باعث پورا سسٹم فیل ہوگیا جس کی وجہ سے مذکورہ سنٹر کا مین سرور سے رابطہ کٹ گیا جسے آٹھ گھنٹے بعد بحال کیا گیا اس حوالے سے شہریوں نے مسائل کے حل کے لئے شہر میں نئے سنٹر کے قیام اور سسٹم کی اپ گریڈیشن کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...