پی ایس او نے ماحول دوست ڈیزل کی پہلی کھیپ درآمد کرلی

پی ایس او نے ماحول دوست ڈیزل کی پہلی کھیپ درآمد کرلی

کراچی (اسٹاف رپورٹر) قومی آئل کمپنی پی ایس او نے ملک میں اعلیٰ معیار کے ایندھن کی فراہمی کے لیے اپنے قائدانہ کردار کو نبھاتے ہوئے سلفر کی کم مقدار کی حامل ڈیزل پراڈکٹ کی پہلی کنسائمنٹ امپورٹ کرلی ہے، سلفر کی کم مقدار کے حامل ڈیزل کی پہلی کھیپ لے کر بحری جہاز کراچی کی بندرگاہ پر پہنچ گیا ہے۔ اعلیٰ معیار کا یہ ڈیزل ماحول کی بہتری اور گاڑیوں کی کارکردگی بڑھانے میں معاون ثابت ہوگا۔ پی ایس او نے حال ہی میں پاکستان میں پہلی مرتبہ اعلیٰ معیار کا RONپیٹرول بھی متعارف کرایا ہے۔ پاکستان کے ایندھن کے شعبے میں انقلاب کے عمل کو آگے بڑھاتے ہوئے پی ایس او نے سلفر کی کم مقدار کے حامل ڈیزل کی پہلی کھیپ کویت سے درآمد کرلی ہے۔ یہ اقدام پاکستان میں اعلیٰ معیار کے ڈیزل دستیابی کے حوالے سے ایک نئی جہت کا آغاز ہے جس کا تسلسل آنے والے ہفتوں اور مہینوں میں جاری رہے گا۔ پی ایس او کی نئی ڈیزل پراڈکٹ سلفر کی کم مقدار (500پی پی ایم) کی حامل ہے۔ ( اس کے برعکس کراچی میں قائم ریفائنریز10,000پی پی ایم کی ڈیزل پراڈکٹ فراہم کررہی ہیں) ۔ پی ایس او کا اعلیٰ معیار کا نیا ڈیزل پاکستان کا پہلا اور واحد EURO II معیار کا ڈیزل ہے جو جلد ہی پاکستان کی مارکیٹ میں دستیاب ہوگا۔ وفاقی وزیر برائے پیٹرولیم و قدرتی وسائل شاہد خاقان عباسی نے پی ایس او کے اس اقدام کو سراہتے ہوئے کہا کہ ’’پاکستان میں پہلی مرتبہ ماحول دوست اور گاڑیوں کی کارکردگی کے لیے بہترین ڈیزل کی درآمد کرنے والی پہلی آئل مارکیٹنگ کمپنی کا اعزاز حاصل کرنے پر پی ایس او کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ ملک میں ایندھن کے معیار کی بہتری کے لیے وفاقی حکومت اور وزارت پیٹرولیم و قدرتی وسائل کے ویژن پر عمل درآمد کے لیے پی ایس او کی کاوشیں قابل ستائش ہیں۔ یہ بات بہت قابل اطمینان ہے کہ ملک کی قومی آئل مارکیٹنگ کمپنی ملک میں ایندھن کے منظر نامے کو موثر طریقے سے تبدیل کرنے کے لیے قائدانہ، متحرک اور ذمہ دارانہ کردار ادا کررہی ہے۔ ‘‘نئی ڈیزل پراڈکٹ کی بدولت جہاں ماحول کو بہتر بنانے میں مدد ملے گی وہیں حکومت کو ماحولیاتی آلودگی کے مضمرات پر قابو پاتے ہوئے حکومت موسمیاتی تبدیلی کے اثرات(کلائمنٹ چینج) کے چیلنجز سے نمٹنے کے عزم کو پورا کرنے میں بھی مدد ملے گی۔ڈیزل میں سلفر کی کم مقدار فضائی آلودگی کو کم کرکے صحت سے متعلق خدشات میں بھی کمی کا ذریعہ بنے گی۔ نئے ڈیزل کے استعمال سے فضاء میں ہائیڈروکاربنز اور نائیٹروجن آکسائڈز کے پھیلاؤ کو کم کرنے میں مدد ملے گی جس سے ملک میں ماحولیات کو بھی فائدہ پہنچے گا ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...