سرکاری ادارے قبائلی عوام کو درپیش مسائل حل کرنے میں ناکام ہیں ،فقیر محمد آفریدی

سرکاری ادارے قبائلی عوام کو درپیش مسائل حل کرنے میں ناکام ہیں ،فقیر محمد ...

خیبر ایجنسی ( بیورورپورٹ)فاٹا کے اندر کام کرنے والے سرکاری ادارے قبائلی عوام کے مسائل حل کرنے میں ناکام ہو چکے ہیں ، فاٹا مسائلستان بن چکا ہے ، فاٹا اصلاحات اور صوبے میں انضمام مرکزی حکومت کی ترجیحات میں شامل ہیں ، مسلم لیگ ن فاٹا کے صدر فقیر محمد آفریدی کے لنڈی کوتل میں میڈیا سے بات چیت ۔ پاکستان مسلم لیگ ن فاٹا کے صدر فقیر محمد آفریدی نے اپنی پارٹی کے مقامی قائدین ظاہر شاہ آفریدی ، سید غا جاں ، علاؤ الدین ، نوشیروان شنواری اورساجد خان لنڈی کوتل پریس کلب میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت اور پارٹی قیادت پر واضح کرنا چاہتے ہیں کہ قبائلی عوام فاٹا اصلاحات اور صوبے میں انضمام پر جلد از جلد عمل درآمد چاہتے ہیں اور اس مقصد کے لئے مسلم لیگ دس جنوری کو پشاور رینگ روڈ پر اپنی طاقت کا مظاہرہ کرینگی فقیر محمد آفریدی نے کہا کہ فاٹا اصلاحات کی راہ میں مرکزی حکومت کے دو اتحادی رکاؤٹ ڈالنے چاہتے ہیں لیکن ان کو کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دیا جائیگا اور گورنر سمیت مرکزی حکومت فاٹا اصلاحات کے نفاذ میں سنجیدہ ہیں تاہم سیاسی جدوجہد تیز کرنے اور دباؤ بڑھانے کی اشد ضرورت ہے تاکہ موجود حکومت کے دور اقتدار ہی میں یہ مسئلہ حل ہو سکے انہوں نے کہا کہ سابق گورنر فاٹا اصلاحات کے حامی نہیں تھے اس لئے انہوں نے ہر فورم پر ان کی بھر پور مخالفت کی فقیر محمد آفریدی نے کہا کہ فاٹا میں امن کا قیام پہلی ضرورت ہے اور اس کے بعد دیگر مسائل حل طلب ہیں تاہم انہوں نے کہا کہ فاٹا مسائلستان بن چکا ہے جہاں تمام اداروں کی کار کردگی صفر ہے انہوں نے فاٹا کے منتخب ایم این ایز کی کار کردگی کو بھی مایوس کن قرار دیتے ہو ئے کہا کہ ان کی نااہلی کی وجہ سے قبائلی علاقوں کے مسائل بڑھ رہے ہیں فقیر محمد نے یہ بھی کہا کہ فاٹا کے تمام علاقوں اور لنڈی کوتل میں بجلی کا مسئلہ گھمبیر شکل اختیار کرتا جا رہے اس لئے حکومت اور منتخب افراد اس کو کوئی مناسب حل تلاش کر کے قبائلی عوام کی یہ مشکل کم کرے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...