کوہاٹ،قومی جرگے کا 6 جنوری سے تیل اور گیس سپلائی بند کرنے کا اعلان

کوہاٹ،قومی جرگے کا 6 جنوری سے تیل اور گیس سپلائی بند کرنے کا اعلان

  



کوھاٹ (بیورو رپورٹ) گیس پریشر کی صورت حال بہتر نہ بنانے پر کوھاٹ قومی جرگہ نے 6 جنوری سے ڈویژن بھر سے تیل و گیس سپلائی بند کرنے کا اعلان کر دیا تفصیلات کے مطابق کوھاٹ‘ ھنگو اور کرک کے مشران پر مشتمل قومی جرگہ نے ڈویژن بھر میں 6 جنوری سے تیل و گیس کی سپلائی مکمل طور پر بند کرنے کا حتمی فیصلہ کر لیا ہے کوھاٹ قومی جرگہ کے چیئرمین میاں نثار گل کاکا خیل ہیں جبکہ سابق ایم این اے شاہ عبدالعزیز‘ ملک ظفر اعظم‘ شمس الرحمن خٹک‘ حاجی عبدالرحمن‘ امیر جے یو آئی مولانا محمد فاروق‘ مفتی اعجاز‘ میاں اخلاق یونس (مسلم لیگ)‘ رحمت سلام خٹک‘ ایم پی اے میجر (ر) شاہ داد خان‘ مفتی سید جنان اور دیگر قومی مشران جرگہ کے ممبران میں شامل ہیں احتجاج کے لیے عوامی راہ ہموار کر کے ایسٹ انڈیا کمپنی کا روپ دھار لیا ہے اس سلسلے میں پی ٹی آئی سرکار کی کارکردگی بھی انتہائی مایوس کن ہے عوامی مشکلات سے اسمبلی فلور پر حکومت کو بار بار آگاہ کیا مگر زبانی دعوؤں سے بات آگے نہ بڑھ سکی ان کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت کے ذمے خیبر پختونخوا کوھاٹ ڈویژن کے 9ارب 64 کروڑ روپے واجب الادا ہیں جو تاحال نہیں ملے گیس کمپنیوں نے علاقہ بھر کا انفراسٹرکچر اور ماحول تباہ کر کے رکھ دیا ہے اراضی مالکان کو ادائیگیاں نہیں کی گئیں گیس پیداواری علاقہ ہونے کے باوجود یہاں کے عوام گیس پریشر کمی کا شکار ہیں لہٰذا اب ہم نے حتمی فیصلہ کر لیا ہے کہ اب اپنا حق چھین کر لیں گے انہوں نے واضح کیا کہ 6 جنوری صبح 10 بجے سے مکوڑی‘ گرگری توشپہ‘ شکردرہ سمیت تمام سورسز سے تیل و گیس کی سپلائی بند کریں گے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...