وہاری، پولیس کا کسان کو گھرسے اٹھا کر وحشیانہ تشدد ٹانگ ناکارہ، حال تشویشناک

وہاری، پولیس کا کسان کو گھرسے اٹھا کر وحشیانہ تشدد ٹانگ ناکارہ، حال تشویشناک

  



وہاڑی(بیورورپورٹ+نمائندہ خصوصی)پولیس تھانہ ٹھنیگی کی مبینہ طور پر بوگس کاروائیوں میں مصروف مخالفین سے مبینہ سازباز کرکے مقامی کاشتکار کو گھر سے اٹھا لیا اور تھانہ ٹھنیگی میں رشوت نہ دینے پر بدترین تشدد کا نشانہ بناتے ہوئے ٹانگ ناکارہ کر کے معذور کردیا اور رشوت نہ دینے پر منشیات فروشی کا جھوٹا ہے بنیاد مقدمہ درج کر دیا کاشتکار ڈی ایچ کیو ہسپتال میں داخل زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہے ورثاء نے اہل علاقہ کے ہمراہ ڈی ایچ کیو ہسپتال (بقیہ نمبر16صفحہ12پر)

میں احتجاجی مظاہرہ کیا۔ واقعات کے مطابق پولیس تھانہ ٹھنیگی کی حدود چک نمبر 66ڈبلیو بی کے رہائشی ملک مجاہد نے اہل علاقہ ملک اکرم طالب حسین ریاض احمد اور عابد حسین ودیگر کے ہمراہ ڈی ایچ کیو ہسپتال میں احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے کہا کہ 25نومبر کے روز پولیس تھانہ ٹھنیگی کے ایس ایچ او عباس نے سب انسپکٹر منیر خان ودیگر سات اہلکاروں کے ہمراہ میرے چچا ملک اشفاق کے گھر مبینہ طور پر زبردستی داخل ہو گئے اور مبینہ طور پر اشفاق کو تشدد کا نشانہ بنانے لگے جب جوان بچیاں اور انکی والدہ نے تشدد سے روکنے کی کوشش کی تو پولیس اہلکاروں نے انکو بھی تشدد کا نشانہ بنایا اور پولیس ڈالہ میں ڈال کر لے گئے راستہ میں ایس ایچ او ٹھنیگی سے چچا کی گرفتاری کی وجہ پوچھنے پر مجھے بھی پولیس نے پکڑ لیا اور تھانہ لے آئے اور میرے چچا ملک اشفاق کو میری آنکھوں کے سامنے بدترین تشدد کا نشانہ بناتے رہے جس پر مجھے ایک لاکھ روپے رشوت دینے پر دس بارہ گھنٹوں بعد رہائی ملی اور رشوت نہ دینے پر میرے چچا پر منشیات فروشی کا جھوٹا ہے بنیاد مقدمہ درج کر دیا پولیس تشدد کی وجہ سے میرا چچا کی اور چلنے پھرنے سے معذور ہو گیا اب ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں داخل زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہے انہوں نے احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ پنجاب آئی جی پنجاب آر پی او ملتان اور ڈی پی او وہاڑی سمیت متعلقہ اعلی حکام سے نوٹس لے کر جھوٹا ہے بنیاد مقدمہ خارج کر کے فوری طور پر رہائی کا مطالبہ کیا ہے۔

تشدد

مزید : ملتان صفحہ آخر