تیسری ورلڈ اسلامک اکنامکس کانفرنس رواں ماہ لاہور میں ہو گی

    تیسری ورلڈ اسلامک اکنامکس کانفرنس رواں ماہ لاہور میں ہو گی

  



لاہور(پ ر)منہاج یونیورسٹی لاہور کے زیر اہتما م تیسری ورلڈ اسلامک اکنامکس اینڈ فنانس کانفرنس رواں ماہ 25 اور 26 جنوری کو پرل کانٹی نینٹل ہوٹل لاہور میں منعقد ہو گی۔کانفرنس میں پاکستان سمیت امریکہ، آسٹریلیا، انگلینڈ، ملائشیا، اور اومان سے بزنس اینڈ فنانس کے شعبے سے وابستہ سکالرز اپنے مقالہ جات پیش کریں گے۔ کانفرنس چیئر، ڈپٹی چیئرمین بورڈ آف گورنرز منہاج یونیورسٹی لاہور ڈاکٹر حسین محی الدین قادری نے کانفرنس کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ منہاج یونیورسٹی لاہور نے ہمیشہ سیاسی، سماجی،معاشرتی،اقتصادی،صحافتی اور انسانی موضوعات پر بین الاقوامی کانفرنسزمنعقد کر کے مشرق اور مغرب کے درمیان ایک نئے علمی اور تحقیقی مکالمے کی بنیاد رکھ دی ہے ہمارا نصب العین جہالت کے اندھیرے ختم کرنا اور ایک اعلیٰ تعلیم یافتہ باشعور نسل کو پروان چڑھانا ہے۔انہوں نے کہا کہ سلامی معاشی نظام کی نشوونما کے لئے مسلم معیشتیں کئی دہائیوں سے جدوجہد کر رہی ہیں،،موجودہ دور میں پوری دنیا اور بالعموم مسلم دنیا خاص طور پر متعدد سماجی، معاشی اور ماحولیاتی چیلنجوں کا سامنا کر رہی ہیجس کی وجہ سے بے روزگاری کی شرح کے ساتھ ساتھ غربت اور غیر متوقع آب و ہوا سے ہونے والے نقصان میں اضافہ ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اسلامی معاشی نظام کی خوبصورتی یہ ہے کہ وہ معاشرے میں لوگوں کو بااختیار بنانے اور اس میں تعاون کرنے کے لئے ہر ایک کو دعوت دیتا ہے اور اسے ا?گے بڑھنے کے برابر مواقع فراہم کرتا ہے۔

، اس ضمن میں یونیورسٹیز کی سطح پر بین الاقوامی دانشوروں کے مابین تبادلہ خیال ضروری ہے اور منہاج یونیورسٹی اس قومی اور ملی ضرورت کو پورا کرنے کے حوالے سے پیش پیش ہے، رواں ماہ 25 اور 26 جنوری 2020 کوتیسری ورلڈ اسلامک اکنامکس اینڈ فنانس کانفرنس کا انعقاد بھی اسی سلسلے کی ایک کڑی ہے۔انہوں نے کہا کہ کانفرنس کے انعقاد کا مقصدمنہاج یونیورسٹی کے طلباء و طالبات کو دنیا بھر میں ہونے والی تعلیمی  اورتحقیقی موضوعات کے حوالے سے ہونے والی پیشرفت کے حوالے سے باخبر رکھنا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 4