بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کی دفتر خارجہ طلبی، سکھ برادری سے متعلق من گھڑت الزامات پر شدید احتجاج 

بھارتی ڈپٹی ہائی کمشنر کی دفتر خارجہ طلبی، سکھ برادری سے متعلق من گھڑت ...

  



اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) پاکستان نے بھارت کی جانب سے سکھ برادری سے متعلق من گھڑت الزامات پر شدید احتجاج کرتے ہوئے  بھارتی ڈپٹی  ہائی کمشنر  گورو اہلوالیا کو دفترخارجہ طلب کرکے احتجاجی مراسلہ تھمادیا۔ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق ڈی جی ساؤتھ ایشیا زاہد حفیظ چودھری نے بھارتی ناظم الامور گوراو اہلووالیا کو دفترخارجہ طلب کرکے کہا کہ پاکستان سکھ برادری سے متعلق بھارتی افتراپردازی اور بے بنیاد الزامات سختی سے مسترد کرتا ہے۔ ڈائریکٹر جنرل جنوبی ایشیاوسارک نے ننکانہ صاحب کے سکھ مذہب کے مقدس مقام کی بے حرمتی،اس پر حملے یا ہلڑبازی اور پشاور میں سکھ نوجوان کے قتل کے حوالے سے بھارتی الزامات کو شرانگیزی قرار دیتے ہوئے مسترد کردیا۔ترجمان دفتر خارجہ کی طرف سے جاری بیان کے مطابق ننکانہ صاحب میں سکھوں کے مقدس مقام پر حملہ کا الزام بے بنیاد، من گھڑت اور حقائق کے منافی ہے، پشاور میں سکھ نوجوان کے قتل کو ٹارگٹ کلنگ کا نام دے کر بھارت مذموم مقاصد کے حصول کی ناکام کوشش کررہا ہے۔دفتر خارجہ نے کہا بھارت کشمیریوں پر مظالم سے عالمی دنیا کی توجہ ہٹانے کی کوشش کررہا ہے، بھارت داخلے سطح پر انتشار کا شکار ہے جسے وہ دوسروں پر الزامات لگا کر چھپانا چاہتا ہے، دوسروں پر انگلی اٹھانے سے پہلے بھارت گریبان میں جھانکیں کیونکہ بھارت میں اقلیتوں کی عبادگاہوں پر حملہ معمول بن گیا ہے۔ڈائریکٹر جنرل جنوبی ایشیاوسارک نے زور دیا کہ پاکستان کا آئین تمام شہریوں کے مساوی حقوق کی ضمانت دیتا ہے اور حکومت اقلیتوں کے حقوق کے تحفظ اور کسی بھی امتیازی سلوک کو برداشت نہ کرنے کے عزم پر کاربند ہے۔ 

دفتر خارجہ

مزید : صفحہ اول


loading...