اسرائیلی پولیس نے ٹریفک حادثے کو منظم فدائی حملہ قرار دیدیا

اسرائیلی پولیس نے ٹریفک حادثے کو منظم فدائی حملہ قرار دیدیا

  



مقبوضہ بیت المقدس(این این آئی)اسرائیلی پولیس کی طرف سے جاری ایک بیان میں دعوی کیا گیا ہے کہ چند ماہ قبل بیت المقدس میں سڑک پرپیش آنے والے ایک حادثے کو ٹریفک حادثہ قرار دیا گیا تھا مگرتحقیقات سے پتا چلا ہے کہ وہ ایک فدائی حملہ تھا جس کا مقصد یہودی آباد کاروں اور فوجیوں کو گاڑی تلے روندنا تھا۔مرکزاطلاعات فلسطین کے مطابق اسرائیلی پولیس کی طرف سے جاری کردی ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ مارچ 2019 میں پیش آنے والا ایک واقعہ جسے ٹریفک حادثہ قراردیا گیا تھا کے بارے میں رائے تبدیل کردی گئی ہے۔ یہ ٹریفک حادثہ نہیں بلکہ ایک منظم فدائی حملہ تھا۔اس حادثے میں دو اسرائیلی زخمی ہوگئے تھے جب کہ گاڑی کے ڈرائیور کو حراست میں لیا گیا اور اسے پوچھ گچھ کے بعد چھوڑ دیا گیا تھا کیونکہ اس وقت اس واقعے کے بارے میں فدائی حملے کا کوئی ثبوت نہیں ملا تھا۔پولیس کا کہنا تھا کہ انٹیلی جنس معلومات کی بنیاد پر حال ہی میں دو فلسطینیوں کو دوبارہ حراست میں لیا گیا تو انہوں نے گذشتہ سال مارچ میں ٹریفک حادثے کو منظم فدائی حملے کے طورپر تسلیم کیا ہے۔ پولیس نے ان کے خلاف فرد جرم تیارکرنا شروع کردی۔ انہیں جلد ہی عدالت میں پیش کیا جائے گا۔

مزید : علاقائی


loading...