ایران نے امریکی اڈے پرحملے کے بعدسب سے پہلے کون ساکام کیا؟جانئے

ایران نے امریکی اڈے پرحملے کے بعدسب سے پہلے کون ساکام کیا؟جانئے
ایران نے امریکی اڈے پرحملے کے بعدسب سے پہلے کون ساکام کیا؟جانئے

  



کرمان(ڈیلی پاکستان آن لائن)ایران نے امریکی فوجی اڈے پر حملہ کرنے کے بعد سب سے پہلا کام جمعہ کو امریکی ڈرون حملے میں جاں بحق ہونے والے لیفٹیننٹ جنرل قاسم سلیمانی کی تدفین کاعمل مکمل کیا۔

ایرانی پاسداران انقلاب کے حملے کے بعد ہزاروں افراد کی موجودگی میں جنرل قاسم سلیمانی کی باقیات کو سپرد خاک کیا۔اس موقع پر رقت آمیز مناظردیکھنے کو ملے۔لوگ دیوانہ وار ان کے تابوت کو چھوکرمرحوم کو خراج عقیدت پیش کرنے کی کوشش کرتے رہے۔

جنر ل قاسم سلیمانی کی تدفین گزشتہ روز کی جانی تھی تاہم نماز جنازہ کے موقع پر مچنے والی بھگدڑ سے تدفین کا عمل روک دیا گیاتھا کیونکہ بھگدڑ میں درجنوں افراد جاں بحق اور زخمی ہوگئے تھے۔

واقعے کے بعد حکام نے جنرل قاسم سلیمانی کی تدفین موخر کردی تھی۔تاہم اب امریکی اڈے پر میزائلوں کی بارش کے بعدایرانی جنرل کی باقیات کو سپرد خاک کردیاگیا۔

واضح رہے امریکا ایران کشیدگی کے باعث خطے پر جنگ کے بادل منڈلا رہے ہیں۔ایرانی کمانڈر قاسم سلیمانی کے قتل کے جواب میں ایران نے عراق میں امریکیوں کے زیر استعمال فوجی اڈوں پر میزائل حملے کردیے ہیں جس کی تصدیق پنٹا گان کی جانب سے بھی کر دی گئی ہے۔

ایرانی میڈیا کا دعویٰ ہے کہ حملہ پاسداران انقلاب کی جانب سے کیا گیا جس میں زمین سے زمین پر مار کرنے والے درجنوں میزائل داغے گئے۔حملے میں اسی امریکیوں کی ہلاکت کا دعویٰ کیاگیاہے۔ جبکہ حملے میں عراق میں موجود امریکی فوجی اڈوں عین الاسد،اربیل اور تاجی کیمپ کو نشانہ بنایا گیا۔ایرانی میڈیا کے مطابق حملوں کا نشانہ بنائے جانے والے مقامات پر امریکی اور دیگر اتحادی ملکوں کے فوجی تعینات ہیں۔

مزید : بین الاقوامی /عرب دنیا